ترکی کی معیشت 10 برسوں میں پہلی مرتبہ کساد بازاری کا شکار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ترکی میں پیر کے روز جاری سرکاری اعداد و شمار کے مطابق 2018 کی آخری سہ ماہی میں ملکی معیشت سالانہ بنیاد پر 3% سکڑ گئی۔ واضح رہے کہ برطانوی خبر رساں ایجنسی رائٹرز کے سروے میں توقع ظاہر کی گئی تھی کہ معیشت کے سکڑنے کی شرح 2.7% تک ہو گی۔

سال 2018 میں ترکی کی کرنسی کو سنگین بحران کا سامنا رہا اور لیرا کی قیمت میں 30% کمی واقع ہوئی۔ گزشتہ برس مجموعی طور پر معیشت کی شرح نمو 2.6 % رہی جو 2009 کے بعد سب سے کم شرح نمو ہے۔ اس طرح یہ کہا جا سکتا ہے کہ ترکی کی معیشت نے 10 برسوں میں پہلی مرتبہ کساد بازاری میں قدم رکھ دیا۔ سروے میں ترکی کی متوقع شرح نمو 2.55%. فی صد بتائی گئی تھی۔

ترکی کے مرکزی بینک نے پیر کے روز بتایا ہے کہ رواں سال جنوری میں ملک کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 81.3 کروڑ ڈالر تک پہنچ گیا۔ واضح رہے کہ 2018 کے پورے سال میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کا مجموعی حجم 27.633 ارب ڈالر تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں