.

نیوزی لینڈ میں قتل عام کے دکھ میں اہل اسلام کے ساتھ ہیں: پاپائے روم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پاپائے روم پوپ فرانسیس نے جمعہ کے روز نیوزی لینڈ کی دو مساجد میں دہشت گردوں کے حملے میں نمازیوں کے قتل عام پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے عالم اسلام کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔

خیال رہے کہ نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں مسلح دہشت گردوں نے دو مساجد پر نماز جمعہ کے وقت حملہ کیا جس کے نتیجے میں اب تک 49 نمازی شہید اور کم سے کم 48 زخمی ہوئے ہیں۔ یہ اعدادو شمار نیوزی لینڈ کی پولیس کی طرف سے جاری کیے گئے ہیں۔

نیوزی لینڈ کے انسپکٹر جنرل پولیس مائیک بش نے بتایا کہ نمازیوں کے قتل عام میں‌ ملوث ایک دہشت گرد کو پکڑ لیا گیا ہے جسے کل عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ جمعہ کو نیوزی لینڈ کی ایک مسجد میں دہشت گردانہ حملے میں 41 اور دوسری میں 8 نمازی سجدے کی حالت میں اللہ کے حضور پیش ہوگئے۔

نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا ارڈیرن کا کہنا ہے کہ پولیس نے نمازیوں کے قتل عام میں ملوث تین مردوں اور ایک عورت کو گرفتار کیا ہے۔ وہ انتہا پسندانہ نظریات رکھتے ہیں مگر انہیں زیرنگرانی افراد کی فہرست میں شامل نہیں کیا گیا تھا۔ ملک میں دہشت گردی کے بدترین واقعے کے بعد ہنگامی حالت کا درجہ بڑھا دیا گیا ہے۔