.

اٹلی : ’’بونگا بونگا‘‘ کی عینی شاہد مراکشی ماڈل کی پُراسرار موت کی تحقیقات کا آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اٹلی میں پراسیکیوٹرز نے ایک مراکشی ماڈل کی پُراسرار موت کی تحقیقات شروع کردی ہے۔مراکشی ماڈل سابق اطالوی وزیراعظم سلویو برلسکونی کی ’’بونگا بونگا‘‘ پارٹیوں میں سے ایک کے خلاف تحقیقات میں گواہ کے طور پر پیش ہوئی تھیں۔

اطالوی خبررساں ایجنسی انسا نے میلان کے پراسیکیوٹر فرانسیسکو گریکو کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ 34 سالہ ایمن فضیل یکم مارچ کو میلان کے ایک اسپتال میں ایک ماہ تک زیر علاج رہنے کے بعد جان کی بازی ہار گئی تھیں۔وہ وہاں 29 جنوری کو زہر خورانی کے بعد سے زیر علاج تھیں اور انھیں مبیّنہ طور پر زہر دیا گیا تھا۔

ایمن فضیل نے 2012ء میں صحافیوں کو بتایا تھا کہ انھوں نے جب سے پراسیکیوٹرز کو جعل سازی کے ایک کیس میں گواہ کے طور پر بیان قلم بند کرایا ہے،اس وقت سے ان کی جان کو خطرہ لاحق ہوگیا ہے۔انھوں نے پراسیکیوٹرز کو بتایا تھا کہ انھیں سابق وزیراعظم کی پارٹیوں میں جو کچھ ہوتا تھا،ان کے بارے میں خاموش رہنے کے بدلے میں رقم کی پیش کش کی گئی تھی۔

سلویو برلسکونی کو 2015ء میں اٹلی کی ایک اعلیٰ عدالت نے قحبہ خانے کی ایک کم سن لڑکی سے رقم دے کر ناجائز جنسی تعلق قائم کرنے کے مقدمے میں بری کردیا تھا۔ان پر الزام تھا کہ انھوں نے بونگا بونگا پارٹیوں کے دوران میں اس لڑکی کو اپنی جنسی ہوس کا نشانہ بنایا تھا۔