حملے سے 9 منٹ پہلے ہمیں مسلح شخص کا بیان ملا: کیوی وزیر اعظم کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جاسنڈا آرڈرن نے بتایا ہے کہ جمعہ کے روز کرائسٹ چرچ میں ہونے والے دہشت گرد حملے کی اطلاع انہیں بہیمانہ واردات سے صرف نو منٹ قبل ملی تھی، جسے انہوں نے اگلے دو منٹوں میں سیکیورٹی نافذ کرنے والے اداروں تک پہنچا دیا تھا۔

یہ اطلاع کرائسٹ چرچ میں 50 افراد کی زندگیوں کے چراغ گل کرنے والے دہشت گرد کے ایک بیان پر مشتمل تھی، جسے اس نے انٹرنیٹ پر بھی جاری کیا۔ کیوی وزیر اعظم جاسنڈا آرڈرن نے صحافیوں کو بتایا کہ میرے علاوہ دہشت گرد برینٹن ٹیرینٹ نے اپنا مذکورہ بیان 30 دوسرے افراد کو بھی بھیجا تھا۔

انھوں نے بتایا کہ بیان میں دہشت گرد کارروائی کہاں اور کس وقت کی جانی تھی، اس سے متعلق کوئی تفصیل نہیں تھی، تاہم اس کے باوجود میں نے اس بیان کو فوری طور پر سیکیورٹی اداروں کو بھیج دیا۔

جاسنڈا آرڈرن نے بتایا کہ انھوں نے 74 صفحات پر مشتمل بیان کا مطالعہ کیا ہے جس میں مسلح دہشت گرد نے اپنی بزدلانہ کارروائی کے اسباب وعلل بیان کئے تھے۔’’ہمارے لئے اپنے ملک میں انتہا پسندی کے بیانہ کی موجودگی اور فروغ انتہائی پریشانی کی بات ہے۔‘‘

متاثرہ خاندانوں کے تیارکردہ اعداد وشمار کے مطابق حملے میں شہید ہونے والے نمازیوں کی عمریں 3 سے 77 برس تھیں۔ حکومت نے سرکاری طور پر شہدا کی شناخت کا اعلان نہیں کیا۔ اس فہرست میں 44 مرد، چار خواتین اور دو بچے شامل ہیں۔ کیوی وزیر اعظم نے بتایا کہ کہ فہرست غیر سرکاری ہے، شہدا کی شناخت کے بعد ہی ہم سرکاری فہرست جاری کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں