.

نیوزی لینڈ: دہشت گردانہ حملےمیں بنگالی خاتون نے شوہر کے لیے جان دے دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

نیوزی لینڈ کے شہر کرائیسٹ چرچ میں جمعہ کے روز دو مساجد میں دہشت گردی کے المناک واقعات کی نا خوش گوار یادیں برسوں تک لوگوں کے ذہن میں تازہ رہیں گی۔ دہشت گردی اور بربریت کے اس وحشیانہ فعل کے موقع پر جہاں ایک طرف بزدل شخص کی نہتے نمازیوں‌پر اندھا دھند فائرنگ ہے تو دوسری طرف اپنی جانوں پر کھیل کر دوسروں کی جانیں بچانے کا جذبہ بھی دیکھا گیا۔ ایبٹ آباڈنے راشد نعیم اور اس کے جواں سال بیٹے کی شہادت کے جرات مندانہ اقدام اور گولیوں‌کی بارش میں نمازیوں کو بچانے کی کوشش نے پاکستان کا سر فخر سے بلند کردیا۔ دوسری طرف دہشت گردانہ حملے کے دوران بہادری کا ایک ایسا قابل ستائش واقعہ ایک بنگالی خاتون کا ہے جس نے اپنے معذور شوہر کی زندگی بچانے لیے اپنی زندگی قربان کردی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اس بنگالی بہادر خاتون کی شناخت حُسن آرا بارفین کے نام سے کی گئی ہے اس کے شوہر فالج کے باعث معذور ہیں۔ اللہ نے اس کی زندگی رکھی مگر زندگی بچانے کے لیے بنگالی شہر اپنی مخلص بیوی سے محروم ہوگئے۔

بنگالی اخبارات میں بہادر خاتون حسن آراء کے غیرمعمولی چرچے ہیں۔ اخباری رپورٹس کے مطابق حسن آراء کے پاس فرار کا راستہ موجود تھا مگر اس نے اپنی زندگی خطرے میں ڈال کر اپنے شوہر کی زندگی بچالی اور اپنے جسم پر گولیاں کھا کر دنیا اور آخرت میں سرخرو ہوگئی۔

حسن آراء بارافین کی عمر 42 سال ہے۔ وہ اپنے شوہر کے ساتھ نیوزی لینڈ کے شہر کرائیسٹ چرچ میں مقیم تھے۔ حسن آراء کے شوہر فریدالدین مفلوج ہونے کی وجہ سے وہیل چیئرپر مسجد میں نماز کے لیے آتے اور ان کی وہیل چیئر ان کی اہلیہ لایا کرتی۔ وہ فرید الدین کو مسجد میں چھوڑ کر خود خواتین والے حصے میں نماز ادا کرنے چلی جاتی۔ نماز کے بعد پھر شوہر کو گھر لے جاتے۔

گذشتہ جمعہ کو حسن آراء کو جب پتاچلا کہ مسجد میں نمازیوں پر گولیاں برسائی جا رہی ہیں تو وہ شوہر کو بچانے کے لیے مرد نمازیوں والے حصے میں آئی۔ تب تک کچھ نمازی اس کےشوہر کو دہشت گرد سے دور لے جا چکے تھے۔ وہ اپنے شوہر کو تلاش کرتی آگے بڑھی مگر دہشت گرد کی گولیوں کا نشانہ بن کر جام شہادت نوش کرگئی۔

حسن آراء کے بھتیجے محفوظ چوہدری نے ایک مقامی بنگامی اخبار کو بتایا کہ کرائیسٹ چرچ کی النور مسجد میں خواتین اور مردوں کے الگ الگ سیکشن ہیں۔ ان کی چچی اور چچا دونوں اسی مسجد میں نماز جمعہ ادا کرتے تھے۔ حسن آراء اپنے شوہر کو مسجد میں چھوڑنے کے 15 منٹ کے بعد فائرنگ کا سن کر اپنے شوہر کو بچانے کے لیے بھاگی مگر وہ شوہر کو بچاتے ہوئے خود جام شہادت نوش کرگئی۔

بنگلہ دیش کی اس بہادر خاتون کا آبائی خاندان سلھٹ میں آباد ہے۔ اس نے فریدالدین سے 1994ء شادی کی اور سنہ 2009ء میں آخری بار اپنے آبائی وطن گئی تھی۔