ترکی 'داعش' کا حقیقی اتحادی ہے: جمہوریہ چیک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

جمہوریہ چیک کے صدر میلوش زیمن نے کردوں کے خلاف ترکی کے فوجی آپریشن پر شدید تنقیدکی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ کردوں کے خلاف فوج کشی کرکے انقرہ 'داعش' کو فایدہ پہنچا رہا ہے۔ کرد فورسز داعش کے خلاف برسر پیکار ہیں اور ترکی انہیں کچلنا چاہتا ہے۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ترکی 'داعش' کا حقیقی اتحادی ہے۔

خبر رساں اداروں کے مطابق اندرون ملک دورے کےدوران چیک کے صدر نے صحافیوں سے بات چیت کے دوران ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ترکی کی جانب سے کردوں کے خلاف مسلح کارروائی نے داعش کے خلاف جنگ کو متاثر کیا۔ اس لیے ترکی داعش کا اصل اتحادی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ترکی نے 'داعش' کے تیل کی اسمگلنگ میں اس گروپ کی مدد کی۔ خیال رہے کہ جمہوریہ چیک کے وزیراعظم انڈریے بابیس نےبھی ترکی کی حکومت پر کردوں کے خلاف فوجی کارروائی پر سخت تنقید کی تھی۔

ادرھر جمہویہ چیک میں ترکی کے سفیر احمد نجاتی بیکالی نے صدر زیمن کے الزامات کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے ناپسندیدہ اور بے بنیاد قرار دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں