جوہری معاہدے کی آڑ میں ایران کو انسانی حقوق کی پامالیوں کی کلین چٹ نہیں دے سکتے: فرانس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

فرانس کی حکومت نے کہا ہے کہ ایران مغربی ملکوں کے ساتھ طے پائے جوہری معاہدے کو ملک میں انسانی حقوق کی پامالیوں کے لیے استعمال نہیں کرسکتا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق فرانسیسی حکومت نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایران کا اپنے جوہری پروگرام پر مغرب سے معاہدہ کرلینا اسے اپنے شہریوں کے بنیادی حقوق کو پامال کرنے کی کلین چٹ نہیں دیتا۔ اگر یورپی ممالک ایران کے ساتھ طے پائے سمجھوتے کو بچانے کی کوشش کررہے ہیں تو اس کا یہ مطلب کہ ہم یورپی برادری ایران میں انسانی حقوق کی منظم پامالیوں پر بات نہیں کرے گی۔

خبر رساں ایجنسی "رائیٹرز" کےمطابق فرانسیسی وزیرخارجہ 'جان ایف لوڈریا' نے ایران میں ایک سماجی کرکن نسرین ستودہ کو قید اور کوڑوں کی سزا کے تناظرمیں بات کرتے ہوئے کہا کہ نسرین کے معاملے میں پوری دنیا نے ایران کے خلاف غم وغصے کا اظہار کیا ہے۔ فرانس ایک نہتی اور بے گناہ خاتون کو کوڑوں اور قید کی سزا دینے شدید مذمت کرتے ہوئے اسے انسانی حقوق کی کھلےعام پامالی قرار دیتا ہے۔

خیال رہے کہ ایرانی انسانی حقوق کارکن نسرین ستودی کوایک انقلاب عدالت نے38 سال قید اور 148 کوڑے مارنے کی سزا سنائی ہے۔ نسرین کے شوہر رضا خنداں نے ایمنسٹی انٹرنیشنل سے بات کرتے ہوئے اپنی اہلیہ کی صحت کےحوالے سے سخت تشویش کا ظہار کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں