.

داعش بدستور خطرہ ہے، البغدادی کہاں ہے؟: عالمی اتحاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام اور عراق میں شدت پسند گروپ'داعش' کے کچلے جانے کے باوجود بین الاقوامی فوجی اتحاد نے داعش کے خطرات کے بارے میں خبردار کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق داعش کے خلاف جنگ کے لیے قائم کردہ عالمی اتحادہ کے ڈپٹی چیف جنرل کریسٹوفر ڈیکا نے 'الحدث' چینل سے بات کرتےہوئے کہا کہ چند روز قبل داعش کا زمین پر قبضہ ختم ہوگیا۔

انہوں نے کہاکہ ہم داعش کے خلاف جنگ کے نئے مرحلے میں داخل ہوگئے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ داعش اب بھی شام اور عراق میں ایک بڑا خطرہ ہے۔

جنرل ڈیکا کا کہنا تھا کہ عالمی اتحاد شام میں سیرین ڈیموکریٹک فورسز کو داعش کےزیرزمین گروپوں کے خلاف کارروائی کے لیے تیار کررہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ شام کی کرد فورسز 'داعش' کے قیدیوں کی حفاظت کی صلاحیت رکھتی ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ داعشی جنگجوئوں کے بین الاقوامی عدالتوں میں مقدمات کی حمایت کرتے ہیں۔ داعش کی سرگرمیوں میں حصہ لینے اور دہشت گردوں کی مدد کرنے والوں کے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جانی چاہیے۔

جنرل ڈیکا کا کہنا تھا کہ پکڑے جانے کے بعد داعش کے کسی لیڈر کو قتل نہیں کیا گیا اور نہ ہی کوئی فرار ہوا ہے تاہم ابو بکر البغدادی کا ابھی تک کوئی پتا نہیں چل سکا۔