.

الجزائرکی 27 رکنی نئی نگران کابینہ کا اعلان، صدر بوتفلیقہ وزیر دفاع ہوں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

الجزائری صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ نے وزیراعظم نور الدین بدوی کے زیر قیادت ستائیس وزراء پر مشتمل نئی نگران کابینہ کا اعلان کردیا ہے۔اس میں سبکدوش ہونے والی حکومت کے چھے وزراء بھی شامل ہیں۔

نئی کابینہ میں چیف آف آرمی اسٹاف لیفٹیننٹ جنرل احمد قاید صالح کو نائب وزیر دفاع کے عہدے پر برقرار رکھا گیا ہے حالانکہ انھوں نے چند روز قبل ہی ایک بیان میں صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ کو حکمرانی کے لیے ان فٹ قرار دینے کا مطالبہ کیا تھا ۔ علیل الجزائری صدر نے وزیر دفاع کا عہدہ بدستور اپنے پاس رکھا ہے۔

الجزائر کے سرکاری ٹیلی ویژن کے مطابق صدر بوتفلیقہ نے نئی کابینہ میں مرکزی بنک کے گورنر محمد لوکال کو وزیر خزانہ اور محمد عرقاب کو وزیرِ توانائی مقرر کیا ہے۔ انھوں نے رمطان لعمامرہ کی جگہ صبری بوقادوم کو ملک کا نیا وزیر خارجہ مقرر کیا ہے۔ رمطان لعمامرہ کو دو ہفتے قبل ہی نئی حکومت میں نائب وزیراعظم مقرر کیا گیا تھا ۔

نئی کابینہ میں شامل دوسرے وزراء کے نام اور محکمے یہ ہیں:
سليمان براہمی - وزيرِعدل ،
صلاح الدين دحمون – وزیر داخلہ ،
ہدى إيمان فرعون – وزیر برائے مواصلات ، ٹیکنالوجی اور ڈاک ،
عبد الحكيم بلعابد – وزیر تعلیم وتربیت ،
يوسف بلمہدی – وزیر برائے مذہبی امور ،
موسى دادہ –وزیر برائے کاروباری تعلیم وتربیت ،
بوزيد الطيب - وزير برائے اعلیٰ تعلیم ،
مريم مرداسی – وزيرثقافت ،
كمال بلحود – وزيرتعمیرات ومکانات ،
عبد القادر بن مسعود – وزير سیاحت اور ایجادات ،
غنيہ الداليا – وزير برائے خاندانی امور ،
فاطمہ الزہراء زرواطی – وزير برائے ماحولیات اور قابلِ تجدید توانائی ،
محمد ميراوی – وزير صحت ،
فتحی خويل – وزیر برائے پارلیمانی امور ،
جميلہ تمازيرت – وزیر صنعت اور معدنیات ،
رؤف برناوی – وزير برائے کھیل اور امورِ نوجواناں ،
شريف عماری - وزير زراعت اور ماہی پروری ،
حسن تيجانی ہدام – وزیر محنت اور سماجی بہبود ،
حسان رابحی-وزیر اطلاعات اور حکومت کے ترجمان ،
الطيب زيتوني - وزير المجاہدين ،
سعيد جلاب – وزيرتجارت،
مصطفى كورابہ – وزير برائے ٹرانسپورٹ اور پبلک ورکس ،
علی حمام - وزير برائے آبی وسائل ۔

واضح رہے کہ الجزائر ی صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ نے 12 مارچ کو اپنے خلاف جاری احتجاجی تحریک کے بعد 18 اپریل کوہونے والےصدارتی انتخابات ملتوی کرنے کا اعلان کردیا تھا اور وہ پانچویں مدت صدارت کے لیے بہ طورامیدواربھی دستبردار ہوگئے تھے۔ان کےاس اعلان کے بعد وزیراعظم احمد او یحییٰ نے اپنے عہدے سے استعفا دے دیا تھا۔ن کی جگہ صدر نے نورالدین بدوی کو نیا وزیراعظم نامزد کرکے کابینہ تشکیل دینے کی دعوت دی تھی۔