.

ایران اور ترکی عرب ممالک کے بحرانوں پر تیل چھڑک رہے ہیں: ابو الغیط

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عرب لیگ کے سیکرٹری جنرل احمد ابو الغیط نے اتوار کے روز تیونس میں منعقدہ عرب سربراہ کانفرنس سے‌خطاب میں ترکی اور ایران پر عرب ممالک میں مداخلت کرنے اور بحرانوں کو ہوا دینے کا الزام عاید کیا۔

العربیہ ڈااٹ نیٹ کے مطابق سربراہ کانفرنس سے خطاب میں احمد ابو الغیط نے گذشتہ سال عرب ممالک میں اٹھنے والے بحرانوں کے حل کے سلسلے میں سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی مساعی کی تحسین کی۔

انہوں نے کہا کہ ایران اور ترکی کی طرف سے علاقائی مسایل میں مداخلت نے بحرانوں کو مزید طول دیا۔

عرب لیگ کے سیکرٹری جنرل نے کہا کہ عرب اقوام دہشت گردی کا شکار ہیں۔ عرب اقوام کی قومی سلامتی معاصر تاریخ کے بدترین دور سے گذر رہی ہے۔ عرب ممالک کو بیرونی مداخلت کا سامنا ہے۔ ترکی اور ایران اس مداخلت میں پیش پیش ہیں۔

انہوں‌نے مزید کہا کہ ہم علاقائی ممالک کو عرب خطے میں مداخلت کی کسی صورت میں اجازت نہیں دے سکتے۔ غیرملکی مداخلت کے لیے تمام عرب ممالک مل کر کام کریں گے۔ عرب لیگ کے سربراہ کا کہنا تھا کہ خانہ جنگ میں کوئی بھی فاتح نہیں ہوتا۔ عرب ممالک کی قومی سلامتی ایک ہے جسے الگ الگ نہیں قرار دیا جاسکتا۔

شام کےمقبوضہ وادی گولان کے بارے میں بات کرتے ہوئے احمد ابو الغیط نے کہا کہ وادی گولان پر اسرائیل کی حاکمیت تسلیم کرنا بین الاقوامی قوانین اور عالمی اصولوں کی کھلی خلاف ورزی ہے۔