.

صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ استعفیٰ دینے کی تیاری کررہے ہیں:ذرائع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

الجزائر کے ذرائع ابلاغ نے بتایا ہے کہ صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ آئین کے آرٹیکل 102 کے تحت صدارت کے عہدے سے مستعفی ہونے کی تیاری کررہے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ کل منگل تک عہدہ چھوڑ سکتے ہیں۔

ذرائع کی طرف سے یہ خبر ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب دوسری جانب اتوار کی شام الجزائر کی نئی 27 رکنی کابینہ کا اعلان کیا گیا جس میں صدر بوتفلیقہ کو وزیر دفاع کا قلم دان سونپا گیا ہے۔ مسلح افواج کے سربراہ احمد قاید صالح نائب وزیردفاع کے عہدے پر بدستور موجود ہیں حالانکہ وہ کھلے عام یہ کہہ چکے ہیں کہ صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ پیرانہ سالی اور خرابی صحت کی وجہ سے صدارت کی ذمہ داریاں ادا نہیں کر پا رہےہیں۔ اس لیے اس لیے انہیں آئین کے آرٹیکل 102 کے تحت خود ہی رضاکارانہ طور پرعہدہ چھوڑ دینا چاہیے۔

ہفتے کےروز آرمی چیف جنرل احمد قاید صالح نے دستوری کونسل سے ایک بار پھر یہ مطالبہ کیا تھا کہ وہ 82 سالہ صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ سے آئین کے آرٹیکل 102 کے تحت استعفیٰ لے۔

قبل ازیں الجزائری فوج کی طرف سے واضح‌کیا گیا تھاکہ وہ ملک میں اقتدار کی تبدیلی کے لیے کوئی غیر آئینی اقدام یا فوج کے خلاف کوئی اقدام قبول نہیں‌کیا جائےگا۔