ایران : صوبہ خوزستان میں سیلاب کے خطرے کے پیش نظر 70 دیہات خالی کرنے کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایرانی حکومت نے تیل کی دولت سے مالا مال جنوب مغربی صوبے خوزستان میں سیلاب کے خطرے کے پیش نظر 70 دیہات کو خالی کرانے کا حکم دیا ہے۔

ایران کی سرکاری خبررساں ایجنسی ایرنا کے مطابق شوش کاؤنٹی کے گورنر عدنان قاضی نے کہا ہے کہ جن دیہات کو خالی کرانے کا حکم دیا گیا ہے، وہ دریا دیز اور کرخہ کے نزدیک واقع ہیں۔

ایران کے شمالی اور جنوبی علاقوں میں گذشتہ دو ہفتے میں شدید بارشوں کے نتیجے میں طوفان سے 57 افراد ہلاک کم سے کم پانچ سو زخمی ہوگئے ہیں۔گذشتہ ایک عشرے کے بعد ایران میں یہ شدید بارشیں ہیں ۔

ایران نے جنوبی صوبوں میں پہلے ہی ہنگامی حالت نافذ کررکھی ہے اور سیلاب کے بعد پہلے ہی دسیوں دیہات کو خالی کرایا جاچکا ہے۔19 مارچ کے بعد شدید بارشوں کے نتیجے میں ایران کے 31 میں سے 23 صوبے متاثر ہوئے ہیں۔ محکمہ موسمیات کی پیشین گوئی کے مطابق آیندہ دنوں میں ایران کے مغربی اور جنوب مغربی صوبے طوفانوں کی زد میں آسکتے ہیں۔

دو شمالی صوبے گلستان اور مزنداران گذشتہ ایک ہفتے سے طوفانی بارشوں کے نتیجے میں سیلاب کی زد میں ہیں۔ ایران کے سرکاری پریس ٹی وی کے مطابق ان دونوں صوبوں کے مختلف شہروں اور دیہی علاقوں میں سیلاب سے 56 ہزار سے زیادہ افراد متاثر ہوئے ہیں۔ واضح رہے کہ ایران کے مشرقی صوبے آذر بائیجان میں گذشتہ سال طوفانی بارشوں کے بعد سیلاب کے نتیجے میں کم سے کم تیس افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں