برطانوی عدالت سے 'بارکلیز' بنک کے دو سابق عہدیداروں کو 9 سال قید کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برطانیہ کی ایک عدالت نےبارکلیز بنک کے دو سابق عہدیداروں کو انٹرنیشنل یوروپیو انڈیکس میں منافع کی شرح جعل سازی کی سازش کرنے کے الزام میں نو سال قید کی سزا کا حکم دیا ہے۔

خبر رساں ادارے "رائیٹرز" کے مطابق عدالت نے 62 سالہ کولین برمنگھم جو مانیٹری مارکیٹ کے سابق تجزیہ نگار بھی رہ چکے ہیں کو پانچ سال قید کی سزا سنائی ہے جب کہ 40 سالہ کاروباری شخصیت کارلو پالومپو کو چار سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ عدالت نے اسی کیس میں 41 سالہ سیسیۃ پوہارٹ کو بری کردیا۔ پوہارٹ کا تعلق سویڈن سے بتایا جاتا ہے۔

منافع کی شرح میں ہیر پھیر کے الزامات میں سزا کا سامنا کرنے والے بیرمنگھم اور پالومپو اپنے اوپر عاید کردہ الزامات کو مسترد کرچکے ہیں۔ دونوں ملزمان کو یہ سزا حلف لینے والی کمیٹی کی سفارش پر دی گئی ہے۔

گذشتہ برس اس کمیٹی نے دونوں ملزمان کو منافع کی شرح میں غیرقانونی طور تبدیلی کرنے کی سازش پر انہیں قید کی سزا سنائے جانے کی سفارش کی تھی تاہم بعد میں کمیٹی نے اپنا فیصلہ معطل کردیا تھا۔ حال ہی میں اس کیس کو دوبارہ کھولا گیا۔ برطانیہ کی خطرناک دھوکہ دہی کے جرائم کی روک تھام کرنے والے دفتر'ایس ایف او' کےسامنے یہ مقدمہ پیش کیا گیا۔ ملزمان کے خلاف مسلسل سات سال تک فوج داری تحقیقات جاری رہی ہیں۔

پراسیکیوٹر جنرل کےنمائندوں کا کہنا ہے کہ ملزمان نے یوروپیو کےڈیٹا میں ہیر پھیر کرنے اور انڈیکس میں جعلی اعدادو شمار شامل کرنے کی سازش کی تھی۔انہوں نے 150 کھرب ڈالر اور 180 کھرب ڈالر کے درمیان رقوم کےمنافع کی شرح میں ہیر پھیر کیا۔ یہ سازش سنہ 2005ء اور 2009ء کےدرمیان کی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں