طرابلس میں فوجی کارروائی کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے: ترجمان لیبی فوج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا کی مسلح افواج کے ترجمان احمد المسماری نے کہا ہے کہ طرابلس کو باغیوں اور عسکریت پسندوں سے آزاد کرانے کے لیے جاری فوجی آپریشن 'الکرامہ طوفان' کو منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جمعہ کے روز ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں لیبی فوج کے ترجمان احمد المسماری نے کہا کہ طرابلس فوجی آپریشن کا ہدف دارالحکومت کو آزاد کرانا، لیبیا میں امن واستحکام اور شہریوں کو تحفظ دلانا ہے۔ جب تک طرابلس کو آزاد نہیں کرا لیا جاتا اس وقت تک فوجی آپریشن جاری رہے گا۔

خیال رہے کہ لیبی فوج نے طرابلس کو عسکریت پسندوں سے چھڑانے کے لیے 'الکرامہ طوفان' کے نام سے آپریشن شروع کیا ہے۔

ترجمان نے بتایا کہ فوجی آپریشن الجفرۃ فوجی اڈے کے قریب سے شروع کیا گیا۔ لیبی سیکیورٹی فورسز تیزی کےساتھ پیش قدمی کر رہی ہیں۔ الغریان پہنچنے کے بعد فوج نے العزیزیہ کے علاقے پر قبضہ کر لیا ہے۔

ترجمان نے کہا کہ فوج ترھونہ کے علاقے کو آزاد کرانے کے بعد طرابلس ہوائی اڈے کا گھیرائو کرے گی اور اسے مکمل تحفظ فراہم کیا جائے گا۔

لیبی فوج کی طرف سے سوشل میڈیا میں سرگرم کارکنوں پر فوج اور طرابلس اپریشن کے حوالے سے افواہیں پھیلانے سے گریز کی ہدایت کی۔

المسماری کا کہنا تھا کہ آپریشن کے دوران شہریوں کے جان ومال کا تحفظ یقینی بنائیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ بمباری میں حصہ لینے والے طیاروں کے بارے میں ہمارے پاس تفصیلی معلومات ہیں۔

ادھر جمعہ کے روز لیبی فوج کے عہدیداروں نے 'العربیہ' کو بتایا تھا کہ فوج نے طرابلس میں قصر بن غشیر، وادی الربیع، الخمیس بازار پر کنٹرول حاصل کرنے کے بعد طرابلس کے ہوائی اڈے میں داخل ہوئی ہے۔

لیبیا کی قومی وفاق حکومت نے فوجی آپریشن میں شہریوں کی جان ومال کو نقصان پہنچنے کے اندیشے سے خبردار کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں