طرابلس کو مسلح ملیشیا سے آزاد کرانے تک جنگ جاری رکھیں گے: المسماری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا کی فوج کے ترجمان میجر جنرل احمد المسماری نے کہا ہے کہ مسلح‌ افواج دارالحکومت طرابلس کو مسلح ملیشیائوں کے چنگل سے آزاد کرانے تک جنگ جاری رکھے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ دارالحکومت میں داخل ہونے کا ہمارا اصرار وہاں پر موجود ملیشیائوں کو باہر نکالنے کے لیے ہے۔

جمعہ کے روز ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں لیبی فوج کےترجمان احمد المسماری نے کہا کہ ہماری فورسز فضائی معاونت سے دارالحکومت کی طرف بڑھ رہی ہیں۔ لڑائی دن رات جاری ہے۔ طرابلس میں ہمیں القاعدہ کے عناصر کا سامنا ہے۔

ایک دوسری پیش رفت میں جنرل المسماری نے کہا کہ بعض ممالک طرابلس کے مسلح گروپوں کو عسکری تربیت اور ان کی لاجسٹک مدد کر رہے ہیں۔ طرابلس میں دہشت گردوں کی معاونت لڑائی کو طول دے سکتی ہے اور اسکے نتیجے میں شہریوں کے جانی نقصان میں اضافے کا اندیشہ ہے۔ انہوں‌ نے دعویٰ‌ کیا کہ طرابلس میں موجود ملیشیا نے دارالحکومت میں شہری آبادی کو حملوں کا نشانہ بنانا شروع کر رکھا ہے۔

جنرل المسماری نے کہا کہ عالمی برادری کو چاہیے کہ وہ بعض‌ ممالک کی طرف سے لیبیا میں دہشت گردوں کی معاونت بند کرائے۔ ان کا کہنا تھا کہ لیبیا میں فوج کے خلاف بعض ذرائع ابلاغ گمراہ کن پروپیگنڈہ کر رہے ہیں۔

خیال رہے کہ لیبیا کی سرکاری فوج کی طرف سے دارالحکومت طرابلس میں عسکری گروپوں کے خلاف فوجی کارروائی شروع کی گئی ہے۔ لیبی فوج نے قومی وفاق حکومت کے سربراہ کی گرفتاری کے بھی احکامات دیے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں