عمر البشیر کے دو بھائی گرفتار، غیرسرکاری فورسز فوج میں ضم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوڈان کی عبوری عسکری کونسل کے ترجمان لیفٹیننٹ جنرل شمس الدین کباشی نے کہا ہے کہ اقتدار جلد از جلد قوم کے منتخب نمائندوں کے حوالے کر دیا جائے گا۔

ان کا کہنا ہے کہ سابق رجیم کے اہم عہدیداروں کی گرفتاریاں جاری ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ غیر سرکاری فورسز، پاپولر پولیس اور پپیلز ڈیفنس فورس کو فوج کے ماتحت کر دیا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ‌ کے مطابق بدھ کو سوڈان کی عبوری فوجی کونسل نے مزید اہم اقدامات کیے جن میں سابق معزول صدر عمر البشیر کے دو بھائیوں کی گرفتاری عمل میں لائی گئی۔ اس کے علاوہ کونسل کی جانب سے انسداد بدعنوانی کے اقدامات کا اعلان کیا گیا اور مسلح جنگجو گروپوں کے ساتھ امن عمل کو آگے بڑھانے کا فیصلہ کیا گیا۔

عبوری کونسل کے ترجمان جنرل الکباشی نے کہا کہ بدعنوانی میں‌ ملوث ہونے کے شبے میں سابق حکومت میں رہنے والے اہم عہدیداروں کو گرفتار کیا جا رہا ہے۔ معزول صدر عمرالبشیر کے دو بھائیوں عبداللہ اور العباس کو حراست میں‌ لے لیا گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ سابق حکومت کے بعض عہدیدار روپوش ہو چکے ہیں، جن کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں۔

لیفٹیننٹ جنرل شمس الدین الکباشی کا کہنا تھا کہ فوجی حکومت زیادہ دیر تک اقتدار پر قابض نہیں‌ رہے گی بلکہ اقتدار جلد جلد قوم کے حوالے کر دیا جائے گا۔

انہوں‌ نے افریقی فیڈریشن کونسل کے وفد کے ساتھ ملاقات میں کہا کہ جتنا جلدی ممکن ہوا اقتدار قوم کے منتخب نمائندوں کے سپرد کر دیا جائے گا۔

کل بدھ کو افریقی کونسل کے ایک وفد نے جلال الدین الشیخ کی قیادت میں سوڈان کی عبوری کونسل کے حکام سے ملاقات کی۔ اس ملاقات میں سوڈان کی موجودہ سیاسی صورت حال اور اقتدار سول نمائندوں کے حوالے کرنے سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

قبل ازیں سوڈانی عسکری کونسل سے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے وفود نے بھی ملاقات کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں