.

فرانس میں "قطر چیریٹی" کی جانب سے انتہا پسند نظریات پھیلائے جانے کی تحقیقات کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس کے رکن پارلیمنٹ گیلبرٹ کولر نے مطالبہ کیا ہے کہ فلاحی ادارےQatar Charity (کیو سی) کی جانب سے اُن سرگرمیوں کی فنڈنگ کی تحقیقات کے واسطے ایک کمیٹی بنائی جائے جو ممکنہ طور پر فرانس کے نظامِ عامّہ میں خلل کا باعث بن رہی ہیں۔

گیلبرٹ نے اپنی مجوزہ قرار داد کا مکمل متن "فرنچ نیشنل ریلی پارٹی" کی ویب سائٹ پر پوسٹ کیا ہے۔ گیلبرٹ کے مطابق ایک انتہائی معتبر اور مصدقہ کتاب میں دو سینئر صحافیوں نے بھی اُن مذہبی مبلغین کی تعداد کا انکشاف کیا ہے جن کو قطر چیریٹی کی جانب سے فنڈنگ مل رہی ہے۔ قطر چیریٹی اس میدان میں موجود سب سے زیادہ طاقت ور غیر سرکاری تنظیم ہے۔

گیلبرٹ نے مزید کہا ہے کہ مذکورہ کتاب میں پہلی مرتبہ سرمایہ کاری کے ایسے منصوبے سے متعلق خفیہ دستاویزات پیش کی گئی ہیں جو فرانس میں الاخوان المسلمین تنظیم سے مربوط ایک تحریک جنم دینے کے لیے ترتیب دیا گیا۔ کتاب میں 140 ایسے منصوبوں کا بھی انکشاف کیا گیا جن کو یہ غیر سرکاری تنظیم فنڈنگ دے رہی ہے۔ ان منصوبوں میں مفت تعلیم دینے والے اسکولوں کے علاوہ مساجد اور انتہا پسندوں کے مراکز کے لیے مالی رقوم کی فراہمی شامل ہے۔

گیلبرٹ کے مطابق کتاب کے دونوں مصنفین نے یورپ کے 6 اور فرانس کے 12 شہروں کا تعین کیا ہے جن کو دوحہ میں امیر قطر تمیم آل ثانی کی سرمایہ کاری کے ذریعے ہدف بنایا گیا ہے۔ اس مقصد کے لیے قطر چیریٹی (کیو سی) کے ذریعے یا اس کے علاوہ فرضی تنظیموں کے راستے جانے والی مالی رقوم کو کام میں لایا جا رہا ہے۔

فرانسیسی رکن پارلیمنٹ نے باور کرایا ہے کہ اس پروگرام کا مقصد خاص طور پر نوجوانوں میں الاخوانی ثقافت کو پھیلانا ہے۔ مذکورہ ذرائع کے مطابق یورپ میں 25 گرجا گھروں سمیت درجنوں عمارتوں کو پہلے ہی خرید لیا گیا ہے۔

تحقیق سے یہ بھی واضح ہوا ہے کہ قطر چیریٹی (کیو سی) جس کو قطر کی وزارت خارجہ اپنی حکمراں قیادت کی مدد سے سپورٹ کر رہی ہے ،،، یہ ادارہ فرانس میں الاخوانی اسلامی تنظیموں کے اتحاد (UOIF) کے زیر انتظام مساجد اور اسکولوں کو جزوی طور پر فنڈنگ فراہم کر رہا ہے۔ ترجمان کے مطابق فرانس میں جھونکی گی رقم کا حجم ممکنہ طور پر 2.5 کروڑ یورو تک پہنچ چکا ہے۔ اس رقم کو تقریبا آٹھ شہروں میں تقسیم کیا گیا۔

گیلبرٹ نے واضح کیا کہ کتاب میں شامل تمام تر انکشافات سے ثابت ہوتا ہے کہ حالیہ وقت میں اور مستقبل میں فرانس کی سرزمین پر نظامِ عامّہ کے حوالے سے شورش اور کھلے خطرات موجود ہیں۔ گیلبرٹ نے بتایا کہ قطر چیریٹی ادارہ فرانس میں کونڈی سور سیرٹ جیل میں 5 مارچ 2019 کو چاقو سے حملے میں ملوث ایک خطرناک دہشت گرد کے خاندان کے ساتھ قریبی تعلق رکھتا ہے۔

فرانسیسی رکن پارلیمنٹ نے زور دیا کہ سامنے آنے والے انکشافات کا قومی سطح پر قائم کردہ ایک تحقیقاتی کمیٹی کی جانب سے جامع اور تفصیلی جائزہ لیا جانا چاہیے۔ اس کے بعد مطلوبہ سفارشات اور ہدایات بھی مرتب کر کے سامنے لائی جانی چاہئیں۔