.

افغانستان: دارالحکومت کابل میں وزارتِ مواصلات پر حملہ آور تمام جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغان سکیورٹی فورسز نے دارالحکومت کابل میں وزارتِ مواصلات پر حملہ کرنے والے خودکش بمباروں اور مسلح افراد کو ہلاک کردیا ہے۔

وزارت داخلہ نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر اطلاع دی ہے کہ خودکش بمباروں اور مسلح افراد نے پہلے وزارت مواصلات کے تحت مرکزی ڈاک خانے پر بیک وقت دھاوا بولا تھا اور وہاں موجود عملہ کے دوہزار سے زیادہ ارکان کو عمارت میں محصور کردیا تھا لیکن افغان سکیورٹی فورسز نے جوابی کارروائی کرکے تمام حملہ آوروں کو ہلاک کردیا ہے۔

کابل کے پولیس سربراہ جنرل سیّد محمد روشن دل نے بتایا ہے کہ ایک خودکش بمبار نے شہر کے وسطی علاقے میں واقع ٹیلی مواصلات کی وزارت کے باہر دھماکا کیا تھا۔اس کے بعد دوسرے حملہ آور عمارت کے اندر داخل ہونے میں کامیاب ہوگئے تھے۔

فوری طور پر کسی گروپ نے اس حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے۔ کابل میں داعش اور طالبان جنگجو دونوں ہی متحرک ہیں اور وہ ماضی میں سرکاری عمارتوں اور سکیورٹی فورسز پر متعدد حملوں کی ذمے داری قبول کرچکے ہیں۔

قبل ازیں افغان وزارت داخلہ کے ترجمان نصرت رحیمی نے بتایا تھا کہ سکیورٹی فورسز کی حملہ آوروں سے جھڑپ شروع ہوگئی تھی اور انھوں نے دو خود کش بمباروں کو گولی مار کر ہلاک کردیا تھا۔اس کے بعد حملہ آور مرکزی ڈاک خانے کے نزدیک پہنچ جانے میں کامیاب ہوگئے تھے۔

مقامی ٹی وی چینلز نے حملے کی براہ راست فوٹیج نشر کی ہے ۔ اس میں سرکاری ملازمین جانیں بچانے کے لیے بھاگتے ہوئے دیکھے جاسکتے ہیں اور وہ اس کے ہمسائے میں واقع وزارتِ اطلاعات اور ثقافت کی عمارتوں میں گھس رہے تھے۔بعض افراد کھڑکیوں سے بھی کودتے ہوئے دیکھے جاسکتے تھے۔ حملے کے بعد سکیورٹی فورسز نے عمارت کی جانب جانے والی تمام شاہراہوں کو بند کردیا تھا۔