امریکا نے سری لنکا میں مزید ممکنہ "دہشت گرد" حملوں سے خبردار کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی وزارت خارجہ نے سری لنکا کا سفر کرنے سے خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ "دہشت گرد جماعتیں" سری لنکا میں ممکنہ حملوں کے لیے منصوبہ بندی کر رہی ہیں۔ یہ انتباہ اتوار کے روز سری لنکا میں مختلف مقامات پر گرجا گھروں اور بڑے ہوٹلوں کو دھماکوں کا نشانہ بنانے کی کارروائیوں کے بعد سامنے آیا ہے۔ حملوں میں 290 افراد ہلاک اور 500 کے قریب زخمی ہو گئے۔

امریکی وزارت خارجہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ "دہشت گرد عناصر بنا کسی پیشگی انتباہ کے حملے کر سکتے ہیں"۔ بیان کے مطابق ممکنہ اہداف میں سیاحتی مقامات، ٹرانسپورٹ اسٹیشنز، تجارتی مراکز، ہوٹلز، عبادت گاہیں، ہوائی اڈے اور دیگر مقامات عامہ شامل ہیں۔

ادھر سری لنکا کی پولیس نے پیر کے روز ایک اعلان میں بتایا ہے کہ دارالحکومت کولمبو کے ہوائی اڈے کے نزدیک اتوار کو رات گئے ملنے والے ایک دستی بم کو ناکارہ بنا دیا گیا۔

علاوہ ازیں پولیس نے اتوار کے روز ہونے والے دھماکوں میں ملوث ہونے کی بنیاد پر 13 افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔ پولیس کے ایک ذریعے نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ مذکورہ افراد کو کولمبو اور اس کے قریب دو مختلف مقامات پر زیر حراست رکھا گیا ہے۔ یہ تمام افراد ایک ہی جماعت سے تعلق رکھتے ہیں تاہم جماعت کا نام نہیں بتایا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں