سری لنکا میں بم دھماکوں کے الزام میں آٹھ مقامی افراد گرفتار : وزیراعظم

دارالحکومت کولمبو میں تین ہوٹلوں میں بم دھماکوں میں زخمی ہونے والوں میں پانچ پاکستانی خواتین بھی شامل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سری لنکا میں اتوار کو ایسٹر کے موقع پر پے درپے بم دھماکوں کے الزام میں آٹھ مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔سری لنکا کے وزیراعظم رانیل وکرما سنگھے نے اتوار کی شب ان گرفتاریوں کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ یہ تمام افراد ناموں سے مقامی لگتے ہیں اور تحقیقات کار ان سے تفتیش جاری رکھے ہوئے ہیں ۔ وہ ان کے بیرون ملک کسی گروپ یا افراد سے ممکنہ روابط کی بھی تحقیقات کریں گے۔

سری لنکا کے دارالحکومت کولمبو اور دوسرے علاقوں ، نیگومبو ، کٹواپٹیا اور باٹی کلوا میں ایسٹر کے موقع پر تین گرجا گھروں اور تین ہوٹلوں کو بم حملوں نشانہ بنایا گیا ہے۔اس وقت مسیحی برادری کے لوگ اپنی دعائیہ تقریبات میں مصروف تھے ۔ان بم دھماکوں میں مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 207 ہوگئی ہے۔مہلوکین میں ڈچ، امریکی اور برطانوی شہریوں سمیت 35 غیر ملکی بھی شامل ہیں۔بم دھماکوں میں ساڑھے چار سو سے زیادہ افراد زخمی ہوئے ہیں۔

سری لنکا کے دارالحکومت کولمبو میں تین ہوٹل شنگریلا ، کنگز بری اور سینامن گرینڈ کولمبو بم حملوں میں نشانہ بنے ہیں۔مہلوک اور زخمی غیر ملکی ان ہی ہوٹلوں میں ٹھہرے ہوئے تھے۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق ان بم دھماکوں میں پانچ پاکستانی خواتین بھی زخمی ہوئی ہیں۔ وہ دہشت گردی کا نشانہ بننے والے ایک ہوٹل میں قیام پذیر تھیں۔

وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ پاکستانی سفارت کار اسپتال میں ان زخمی خواتین کی دکھ بھال کے لیے موجود ہیں۔کولمبو میں پاکستان کے سفارت خانے سے زخمیوں کے بارے میں تفصیل جاننے کے لیے ان تین ہنگامی نمبروں پر رابطہ کیا جاسکتا ہے: ،0112055681
0767773750،0112055682

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں