طرابلس میں ہنگامی حالت نافذ، ہلاکتوں کی تعداد 227 تک پہنچ گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

لیبیا میں قومی وفاق حکومت کی طرف سے دارالحکومت طرابلس میں ہنگامی حالت نافذ کرتے ہوئے ہائی الرٹ کادرجہ مزیدبڑھا دیا ہے۔ دوسری جانب عالمی ادارہ صحت کے مطابق طرابلس میں متحارب فریقین کےدرمیان جاری لڑائی میں اب تک 227 افراد ہلاک اور 1128 زخمی ہونے کی تصدیق کی جا چکی ہے۔

العربیہ ڈاٹ‌نیٹ کےمطابق اتوار کےروز قومی وفاق حکومت کی وزارت داخلہ نے دارالحکومت طرابلس میں ہنگامی حالت کے نفاذکا اعلان کیا۔

اتوار کے روز لیبی حکومت نے معیتیقہ ہوائی اڈے کو جنرل خلیفہ حفتر کی فوج کے قبضے سے واپس لے لیا۔
العربیہ چینل کے ذرائع کے مطابق لیبی فوج نے طرابلس میں حکومت کے زیرانتظام "مشروع الموز"پر بمباری کی جس کے نتیجے میں تنصیبات کو نقصان پہنچا ہے۔

نامہ نگاروں کے مطابق ہفتے اور اتوار کے روز طرابلس میں بمباری کے باعث زور دار دھماکوں کی آوازیں سنائی دیتی رہی ہیں۔

نامہ نگاروں کے مطابق عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ طرابلس پر ڈرون طیاروں اور دورسرے جنگی طیاروں کی مدد سے بمباری جاری ہے۔

ادھرلیبی فوج کے ترجمان میجر جنرل احمد المسماری نے کہا ہےکہ اس وقت طرابلس اور اس کے اطراف میں قومی وفاق حکومت اور اس کی ملیشیائوں کے ساتھ گھمسان کی جنگ جاری ہے۔ان کا کہنا تھا کہ اس وقت العزیزیہ میں الکسارات کے مقام پر سخت لڑائی ہو رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں