ترکی نے یورپ میں داعش اور القاعدہ کے لیے بھرتی مہم چلائی : المسماری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا میں قومی فوج کے سرکاری ترجمان میجر جنرل احمد المسماری نے انکشاف کیا ہے کہ ان کے پاس مصدقہ معلومات ہیں کہ ترکی نے ڈرون طیارہ اور اس کے چلانے والا ترک عملہ مصراتہ کی ملیشیا کے حوالے کیا۔

اتوار شام ایک پریس کانفرنس میں فوجی ترجمان نے ترکی پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انقرہ کی انٹیلی جنس نے یورپ میں داعشیوں اور القاعدہ کے عناصر کو بھرتی کیا۔

المسماری کے مطابق یورپی یونین میں شمولیت مسترد ہونے کے بعد ترکی نے عالم اسلام میں ناکام دھڑے کی راہ اپنائی اور اس دھڑے کا نام الاخوان المسلمون ہے۔

ترجمان نے دعوی کیا کہ ترکی کی انٹیلی اور میڈیا کے ایجنٹوں کے ذریعے یورپ میں "داعش" اور "القاعدہ" کے لیے بھرتی کی ایک بڑی مہم چلائی گئی۔ شام اور عراق میں دونوں تنظیموں کے واسطے یورپی شہریوں کو بھرتی کیا گیا اور پھر وہاں ان کا خاتمہ ہو گیا ،،، جیسا کہ لیبیا میں بھی جلد ہونے والا ہے۔

المساری نے میڈیا کے ذریعے سامنے آنے والی خفیہ دستاویزات بھی پیش کیں۔ ان دستاویزات سے انکشاف ہوتا ہے کہ ترکی کی انٹیلی جنس نے 2014 میں مسلح عناصر کو شام منتقل کیا۔ ان میں لیبیا سے تعلق رکھنے والے دہشت گرد بھی تھے جن کو بسوں کے ذریعے پہلے شام سے ترکی لے جایا گیا اور پھر وہاں سے لیبیا منتقل کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں