زکی مبارک نے خود کشی نہیں کی، ترک حکام نے قتل کیا ہے: اہل خانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترکی میں گرفتار فلسطینی نوجوان زکی مبارک کے اہل خانہ نے انقرہ میں حکام پر الزام عائد کیا ہے کہ انہوں نے زکی کو جیل میں ہلاک کر دیا۔

وطن ٹی وی ویب سائٹ کے مطابق اتوار کے روز سوشل میڈیا پر جاری ایک وڈیو میں زکی مبارک کے بھائی زکریا مبارک نے بتایا کہ اس کے بھائی زکی کو ترکی کی جیل میں سیکورٹی فورسز کے ہاتھوں موت کی نیند سلا دیا گیا تا کہ اس کا بے قصور ہونا سامنے نہ آ جائے۔ زکریا نے اس بات کی تردید کی کہ زکی نے خود کشی کی ہے۔

ترکی کے حکام زکی مبارک اور ایک اور فلسطینی پر متحدہ عرب امارات کے لیے جاسوسی کرنے کا الزام عائد کرتے ہیں جب کہ دونوں کے اہل خانہ اس امر کی تردید کر رہے ہیں۔

ترکی کے سرکاری میڈیا نے اعلان کیا تھا کہ زکی مبارک جیل میں خود کشی کر چکا ہے۔

اسی طرح ترک عدلیہ کے ایک ذریعے نے پیر کے روز فرانسیسی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ ترکی میں جاسوسی کے شبہے میں جیل میں قید ایک شخص نے خود کشی کر لی ہے۔

اس سے قبل ترکی نے دعوی کیا تھا کہ استنبول میں دس روز قبل جس شخص کو ایک دوسرے آدمی کے ساتھ حراست میں لیا گیا تھا، وہ امارات کے لیے "سیاسی اور عسکری نوعیت کی جاسوسی" کر رہا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں