.

سوڈان : مظاہرین کے ساتھ جھڑپوں میں 6 سکیورٹی اہلکار ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوڈان کے مختلف علاقوں میں مظاہرین کے ساتھ جھڑپوں میں چھے سکیورٹی اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔ سوڈان کی حکمراں فوجی کونسل نے منگل کے روز ایک بیان میں ان ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے اور مظاہرین کو خبردار کیا ہے کہ وہ تشدد کے واقعات سے باز آجائیں۔

عبوری فوجی کونسل کے نائب سربراہ محمد حمدان داغولو المعروف حمیدتی نے بتایا ہے کہ سوموار کے روز مختلف علاقوں میں سکیورٹی فورسز اور مظاہرین کے درمیان دھینگا مشتی ہوئی ہے اور مظاہرین نے بعض مقامات پر ٹرینیں روکنے اور پل بند کرنے کی کوشش کی ہے۔

تشدد کے ان واقعات کے بعد عبوری فوجی کونسل نے خبردار کیا ہے کہ وہ حزبِ اختلاف کے ساتھ ملک کے مستقبل کے حوالے سے مذاکرات کے لیے تیار ہے لیکن آج منگل کے بعد افراتفری کا سلسلہ بند ہونا چاہیے اور اس کو مزید قبول نہیں کیا جائے گا۔

فوجی کونسل نے قبل ازیں معزول صدر عمر حسن البشیر کی ایک سابق اتحادی اسلامی جماعت پر مظاہرین کے حملے کی مذمت کی تھی۔ ہفتے کے روز بیسیوں مظاہرین نے خرطو م میں اسلامی جماعت پاپولر کانگریس پارٹی کی جلسہ گاہ ایک عمارت کے باہر جمع ہوکر نعرے بازی کی تھی اور ان کا کہنا تھا کہ اسلام پسندوں کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے۔ان مظاہرین کی کانگریس پارٹی کے کارکنان سے جھڑپیں بھی ہوئی تھیں اور ان میں اس جماعت کے 64 کارکنان زخمی ہوگئے تھے۔