اسکول اسٹیج ڈرامے میں اصلی ہتھیار ، طالب علم کی جان جاتے جاتے رہ گئی!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روسی دارالحکومت ماسکو کے ایک اسکول میں اسٹیج ڈرامے کی ریہرسل ایک بھیانک المیے کا روپ دھارنے سے رہ گئی۔ شو کے دوران اصلی ہتھیار استعمال کرنے کے نتیجے میں ایک طالب علم کی جان جانے کی نوبت آ سکتی تھی۔

ریہرسل کے دوران 14 سالہ طالب علم نیکیتا چرنیخ غیر متوقع طور پر زخمی ہو گیا۔ وہ ناک اور سر میں پیچھے سے زخم آنے کے سبب درد کی شدت سے چلا رہا تھا۔

برطانوی اخبار میٹرو کے مطابق مذکورہ طالب علم کو فوری طور پر ہسپتال منتقل کیا گیا اور ہنگامی طبی امداد اور علاج کے بعد اب اس کی حالت مستحکم ہے۔

خیال کیا جا رہا ہے کہ ریہرسل کے دوران استعمال کیا جانے والا ہتھیار ایک ایئر گن تھی۔ یہ بندوق روس میں ذاتی حفاظت کے واسطے بڑے پیمانے پر استعمال میں آتی ہے۔

ادھر اسکول انتظامیہ نے اصلی ہتھیار کے استعمال کی تردید کرتے ہوئے زور دے کر کہا ہے کہ یہ محض ایک کھلونا تھا۔

گولی چلانے والا طالب علم "ميخائل برونن" کو اپنے ساتھی کے زخمی ہو جانے کے بعد مشکل کا سامنا ہے۔

پولیس ذرائع نے بتایا کہ دونوں گولیاں طالب علم کے سر میں لگیں لیکن خوش قسمتی سے یہ انتہائی خطرناک صورت حال کا باعث نہیں بنیں۔

زخمی طالب علم نیکیتا کی والدہ کا کہنا ہے کہ "میں ابھی تک اس حقیقت پر حیران ہوں کہ اسکول کی ریہرسل میں ایک بندوق موجود تھی۔ میں نے اپنے بیٹے کے ساتھ پیش آنے والا واقعہ اسکول کے اساتذہ کی زبانی سنا"۔

اسکول کے پرنسپل ایلیا نوفوکریشنوف کا کہنا ہے کہ دونوں طلبہ ڈرامے کا کردار ادا کر رہے تھے جس کے دوران ہتھیار کا استعمال ہوا ،،، درحقیقت یہ پلاسٹک کی گولی تھی جس نے طالب علم کی ناک زخمی کر دی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں