بھارت:’’سفاک سیلفی‘‘ نے تین اور نوجوانوں کی جان لے لی، ٹرین تلے کچلے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

بھارت میں تین نوجوان لڑکے ایک ریلوے ٹریک پر سیلفی لیتے ہوئے ٹرین تلے آ کر ہلاک ہوگئے ہیں۔یہ افسوس ناک واقعہ بھارت کی شمالی ریاست ہریانہ کے شہر پانی پت میں پیش آیا ہے۔البتہ ان کا چوتھا ساتھی وہاں سے چھلانگ لگا کر جان بچانے میں کامیاب ہوگیا ہے۔

شہر کے ایک پولیس افسر ایم ایس دباس نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ ’’مقتولین ریلوے ٹریک پر اجتماعی سیلفی بنانے میں مصروف تھے۔انھوں نے جب ایک ٹرین اپنی جانب آتے ہوئے دیکھی تو دوسرے ٹریک پر چھلانگیں دیں لیکن یہ نہیں دیکھا کہ اس پر بھی دوسری جانب سے ٹرین آرہی تھی اور وہ اس کے نیچے آکرکچلے گئے ہیں‘‘۔

ان کے چوتھے ساتھی نے پٹڑی سے دوسری جانب چھلانگ لگائی تھی۔اس لیے وہ بچ گیا ہے۔یہ چاروں نوجوان لڑکے پانی پت میں ایک شادی کی تقریب میں شرکت کے لیے آئے تھے۔ دو مہلوکین کی عمریں انیس، انیس سال اور ایک کی عمر اٹھارہ سال بتائی گئی ہے۔

واضح رہے کہ بھارت ان ممالک میں شامل ہے جہاں سیلفی لیتے ہوئے افراد سب سے زیادہ تعداد میں جان کی بازی ہارتے ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا کے دلدادہ نوجوان سیلفی لیتے ہوئے انتہا پر چلے جاتے ہیں اور وہ خود کو دلیر اور بہادر ظاہر کرنے کے لیے خطرناک جگہوں پر بھی موبائل فون کے کیمروں سے تصویریں بنانے سے گریز نہیں کرتے ہیں۔یوں ان کی غفلت اور بے پروائی سے اس طرح کے اندوہناک حادثات پیش آتے رہتے ہیں۔

آل انڈیاانسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز کے ماہرین کے گذشتہ سال سیلفی سے ہلاکتوں کا ایک تحقیقی مطالعہ کیا تھا۔اس کے مطابق 2011ء سے 2017ء تک چھے سال کے دوران میں دنیا بھر میں 259 افراد سیلفی لیتے ہوئے مختلف حادثات کا شکار ہوکر اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے۔ان میں سب سے زیادہ ہلاکتیں بھارت ہی میں ہوئی تھیں۔اس کے بعد بالترتیب روس ، امریکا اور پاکستان میں سیلفی بنانے کے شوقین افراد کی ہلاکتیں ہوئی تھیں۔

2017ء میں بھارت کی جنوبی ریاست کرناٹک میں ایک ریلوے پٹڑی پر تین طالب عالم سیلفی لیتے ہوئے جان کی بازی ہار گئے تھے۔مشرقی ریاست اوڑیسہ میں ایک بدمست ہاتھی نے اپنی سونڈ میں ایک شخص کو لپیٹ کر زمین پر پٹخ دیا تھا جس سے اس کی موت واقع ہوگئی تھی۔اس وقت وہ شخص اس ہاتھی کے ساتھ کھڑے ہوکر تصویر لینے کی کوشش کررہا تھا ۔

گذشتہ سال بھارت کے وزیر ریلوے پیوش گوئیل نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر لوگوں کو خبردار کیا تھا کہ وہ سیلفی کے شوق میں تصویر کھینچتے ہوئے اپنی جانوں کو خطرے میں ڈالنے سے گریز کریں۔

مقبول خبریں اہم خبریں