.

آسٹریلیا : اماراتی طیارے کو اڑانے کے لیے دھماکا خیز مواد ترکی سے لایا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

آسٹریلیا کی ایک عدالت نے بدھ کے روز "داعش" تنظیم سے تعلق رکھنے والے ایک 51 سالہ لبنانی باشندے کو متحدہ عرب امارات کے طیارے سے متعلق مقدمے میں قصور وار ٹھہرا دیا۔ مذکورہ لبنانی نے 2017 میں سڈنی سے ابوظبی جانے والی اتحاد ایئرویز کی پرواز کو بم دھماکے سے اڑانے کی کوشش کی تھی۔ ملزم خالد خیاط نے یہ بم گوشت کے گرائنڈر میں چھپایا تھا۔

پولیس کے مطابق اماراتی طیارے کو نشانہ بنانے کی کوشش میں استعمال کیا جانے والا بم اعلی کوالٹی کا تھا اور اسے ترکی سے آسٹریلیا لایا گیا۔

خالد خیاط نے نیو ساؤتھ ویلز کی اعلی عدالت کے سامنے اس الزام کو مسترد کر دیا کہ اُس نے 2017 کے اوائل میں دہشت گردی کی مذکورہ کارروائی کی منصوبہ بندی کی۔

جیوری نے بدھ کے روز خالد پر فرد جرم عائد کر دی۔ تاہم ابھی تک اس بات کا فیصلہ نہیں ہوا کہ آیا خالد کا چھوٹا بھائی محمود خیاط (34 سالہ) بھی اسی الزام کے حوالے سے قصور وار ہے۔

خالد خیاط کے خلاف 16 جولائی کو فیصلہ سنایا جائے گا اور اسے عمر قید کی سزا کا سامنا ہو گا۔