.

متحدہ عرب امارات کے پانیوں کے نزدیک چار تجارتی بحری جہاز ’ تخریب کاری‘ کا ہدف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے پانیوں کے نزدیک چار تجارتی بحری جہاز ’تخریب کاری‘ کی کارروائی کا ہدف بن گئے ہیں۔متحدہ عرب امارات کی وزارتِ خارجہ نے اتوار کو اس واقعے کی اطلاع دی ہے اور کہا ہے کہ اس میں کوئی شخص ہلاک یا زخمی نہیں ہوا ہے۔

یو اے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام نے وزارت خارجہ کا ایک بیان جاری کیا ہے اور اس میں بتایا گیا ہے کہ متعلقہ حکام نے تمام ضروری اقدامات کرلیے ہیں اور وہ مقامی اور بین الاقوامی اداروں کے تعاو ن سے اس واقعے کی تحقیقات کررہے ہیں۔

اس نے واضح کیا ہے کہ تخریب کاری کی اس کارروائی میں کوئی ہلاکت ہوئی ہے اور نہ کوئی شخص زخمی ہوا ہے۔ تخریب کاری کا ہدف بننے والے جہازوں سے کسی قسم کے خطرناک مواد یا ایندھن کا اخراج بھی نہیں ہوا ہے۔

وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ فجیرہ کی بندرگاہ پر کسی قسم کی رخنہ اندازی کے بغیر معمول کی سرگرمیاں جاری ہیں۔ اس نے یہ بات زور دے کر کہی ہے کہ ’’ تجارتی بحری جہازوں کو تخریب کاری کا نشانہ بنایا جانا اور ان کے عملہ کی زندگیوں کو خطرے میں ڈالنا ایک خطرناک پیش رفت ہے‘‘۔ بیان میں عالمی برادری پر زور دیا گیا ہے کہ وہ آبی ٹریفک کی سلامتی اور تحفظ کو نقصان پہنچانے والی کسی بھی پارٹی کو روکنے کے لیے اپنی ذمے داریوں کو پورا کرے ۔