بورکینا فاسو میں چرچ پرحملے میں 6 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مغربی افریقا کے ملک بورکینا فاسو میں اتوار کے روز ایک کیتھولک چرچ پرہونےوالے حملے میں کم سے کم چھ افراد ہلاک ہوگئے۔یہ واقعہ شمالی شہر دابلو میں پیش آیا۔ گرجا گھرپرحملےکےبعد سیکیورٹی فورسز نے علاقے کوگھیرے میں‌لےلیا تھا۔

دابلو شہر کے میئر عثمان زنگو نے بتایاکہ اتوار کو مقامی وقت کے مطابق رات نو بجے مسلح افراد نے ایک چرچ پر اس وقت حملہ کیا جب وہاں دعائیہ تقریب اور مذہبی رسومات اداکی جا رہی تھیں۔ ان کا کہنا تھا کہ مسلح‌ افراد نے گرجا گھرمیں گھس کراندھا دھند فائرنگ شروع کردی جس کے نتیجے میں پانچ افراد ہلاک ہوگئے۔ سیکیورٹی ذرائع کے مطابق حملہ آوروں کی تعداد 20 اور 30کےدرمیان تھی۔

عثمان زونگو نے بتایاکہ حملہ آوروں‌نے چرچ، ایک دکان اور ایک ہوٹل کو نذرآتش کردیا۔ وہاں سے وہ ایک اسپتال کی طرف مڑے اور اسپتال کی ایک گاڑی بھی نذرآتش کردی۔ واقعے کے بعد شہر میں خوف وہراس پھیل گیا۔ پولیس نےشہریوں پر زور دیا ہے کہ وہ غیرضروری طورپرگھروں باہر نہ نکلیں۔

خیال رہے کہ بورکینا فاسو میں گذشتہ چار سال کے دوران اسلامی شدت پسند گروپ انصارالاسلام، جماعت نصر اسلام اور صحراءکبریٰ‌میں داعش کےجنگجو سرگرم ہیں جو گرجا گھروں پرحملوں میں ملوث ہیں۔

'اے ایف پی' کے مطابق 2015ء کے بعد اب تک بورکینا فاسو میں ہونےوالے پرتشدد حملوں میں 400 سے زاید افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں