.

حوثیوں کا کعبہ اللہ پر حملہ مجرمانہ دہشت گردی ہے: یمن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی حکومت نے ایران نواز حوثی ملیشیا کی جانب سے مکہ معظمہ پر بیلسٹک میزائل کے ناکام حملے مجرمانہ دہشت گردی قرار دیا ہے۔

یمنی حکومت کے وزیر اطلاعات معمر الاریانی نے کہا ہے کہ حوثی ملیشیا کی طرف سے مکہ معظمہ پر حملے کی ناپاک جسارت کے ذریعے کھلی دہشت گردی اور اشتعال انگیزی کا ارتکاب کیا ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے، کم ہے۔

ٹویٹر اپنے سلسلہ وار پیغامات میں یمنی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ ایرانی حمایت یافتہ حوثی دہشت گردوں نے حالیہ ایام میں سعودی عرب پر دہشت گردانہ حملوں کی مذمت کوشش کی تاہم سعودی عرب کی ائر ڈیفنس فورس نے طائف کی فضائی حدود میں حوثیوں کے میزائل ہدف تک پہنچنے سے قبلہ مار گرایا۔ یہ سب کچھ حوثی دہشت گردوں نے ایک ایسے وقت میں کیا ہے کہ ماہ صیام کے بابرکت ایام چل رہے ہیں۔ حوثیوں کی طرف سے سعودی عرب پر حملے شہر مکہ اور خانہ کعبہ پر حملوں کے مترادف ہیں۔

معمر الاریانی کا کہنا تھا کہ حوثی باغی ایران کے اشاروں پر ناچ رہے ہیں اور ان کی طرف سے سعودی عرب پر ایرانی مذہبی رجیم کے کہنے پر حملے کیے جا رہے ہیں۔ حوثی دہشت گردوں‌ نے سرزمین مکہ پر حملے کی بزدلانہ کوشش کے ذریعے کروڑوں مسلمانوں کے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے اور مذہبی اشتعال انگیزی کی کوشش کی ہے۔

انہوں‌ نے کہا کہ حوثی ملیشیا خطے میں ایرانی ایجنڈے کو آگے بڑھانے اور خطے ایک نئے سیاسی اور اقتصادی بحران سے دوچار کرنے کی مذموم کوشش ہے۔