ایران سے مقابلہ کے لیے مشرق وسطیٰ میں ‌5 ہزار امریکی فوجیوں کی تعیناتی پرغور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکی حکام نے کہا ہے کہ وزارت دفاع 'پینٹاگان' ایران کے ساتھ جاری کشیدگی کے بعد تہران کی طرف سے لاحق خطرات کے تدارک کے لیے مشرق وسطیٰ میں پانچ ہزار افضافی فوج تعینات کرنے پر غور کر رہی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق امریکی حکومت کے دو سینیر عہدیداروں نے بتایا کہ مشرق وسطیٰ میں‌ جاری موجودہ کشیدگی اور ایران کی طرف سے لاحق خطرات کے تدارک کے لیے 5000 اضافی فوجی مشرق وسطیٰ بھیجنے پر غور ہو رہا ہے۔

امریکی عہدیداروں کے مطابق سینٹرل کمانڈ نے پینٹاگان کو پانچ ہزار اضافی فوجیوں کی تعیناتی کی تجویز دی ہے تاہم یہ معلوم نہیںً‌ ہو سکا کہ آیا محکمہ دفاع اس درخواست پر غور کرے گا یا نہیں۔

ایک عہدیدار نے بتایا کہ مشرق وسطیٰ میں تعینات کیے جانے والے امریکی فوجیوں‌ کی حیثیت دفاعی فوج کی ہوگی۔

قبل ازیں بدھ کو 'سی این این' کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ پینٹاگان کے سینیرعہدیداروں کی طرف سے قومی سلامتی کمیٹی کو بتایا گیا ہے کہ مشرق وسطیٰ میں ایران کےساتھ جاری موجودہ کشیدگی کے پیش نظر ہزاروں کی تعداد میں اضافی فوج کی ضرورت ہے۔

خیال رہے کہ حالیہ ایام میں امریکا اور ایران کے درمیان سخت کشیدگی پائی جا رہی ہے۔ امریکا اور ایران ایک دوسرے کے خلاف جنگ کے دھانے پر کھڑے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں