امریکا مشرق وسطیٰ میں مزید کتنے فوجی تعینات کرے گا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکی وزارت دفاع 'پینٹا گون' نے کہا ہے کہ امریکا مشرق وسطیٰ میں ایران کی طرف سے لاحق خطرات کے تدارک کے لیے مزید 900 فوجی بھیجے جائیں گے۔ اس کے علاوہ خطے میں پہلے سے موجود 600 فوجیوں‌ کے قیام کی مدت میں توسیع کی جائے گی۔ اس طرح مشرق وسطیٰ میں ہنگامی بنیادوں پر تعینات کیے جانے والے امریکی فوجیوں کی تعداد 1500 ہو جائے گی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق پینٹاگون کا کہنا ہے کہ اضافی فوجی عملے میں پیٹریاٹ میزائلوں کی بیٹریوں کو آپریٹ کرنے، سراغ رساں طیاروں کے ماہرین اور انجینیئر شامل ہوں‌ گے تاہم ایران کی طرف سے لاحق خطرات سے بچائو کے لیے عراق اور شام میں اضافی فوج تعینات نہیں کی جائے گی۔

اضافی فوجی نفری میں خود کار اور مینول طیاروں کا عملہ، لڑکا طیاروں کا اسکواڈرن، پیٹریاٹ میزائل بٹالین کے اہلکار اور فوجی انجینیر شامل ہوں‌ گے۔

جمعہ کے روز امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مشرق وسطیٰ میں 1500 اضافی فوجی تعینات کرنے کا اعلان کیا تھا۔ صدر ٹرمپ کا کہنا ہے کہ مشرق وسطیٰ میں اضافی فوج تعینات کرنے کا مقصد امریکا اور اس کے اتحادیوں کے مفادات کا تحفظ یقینی بنانا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں