.

تصاویر: گرج چمک کے ساتھ بارش نے 'بللسمر' کی خوبصورتی کو چار چاند لگا دیئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے جنوبی علاقے عسیر میں 'بللسمر' کے مقام پر ہونے والی حالیہ بارشوں نے خطے کا حسن دوبالا کر دیا۔ بارش نے بللسمر میں ہر سو حسین قدرتی مناظر کی رعنائیوں اور قدرت کی صناعی کے رنگ بکھیر دیئے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق حال ہی میں سعودی عرب کے جنوبی علاقے عسیر میں ہونے والی بارشوں نے جل تھل ایک کر دیے۔

مناظر قدرت کو اپنے کیمرے کی آنکھ سے محفوظ کرنے والے فوٹو گرافر محمد القرنی نے مملکت کے جنوب میں بارش کے بعد نکھر کر سامنے آنے والے قدرتی مناظر کو اپنے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کیا ہے۔ بارش نے پہاڑوں، جنگلوں اور وادیوں کو ایک نئی رونق اور تازگی بخش دی اور ہر طرف ندی نالے ابل پڑے۔

محمد القرنی چھ سال سے پیشہ وارانہ فوٹو گرافی کر رہے ہیں۔ وہ قدرتی اور حسین مناظر کو کیمرے میں محفوظ کرنے کے لیے جدید ترین ڈرون کا استعمال کرتے ہیں اور عسیر کے علاقے کا طلسماتی قدرتی حسن اس حوالے سے اہمیت کا حامل ہے۔

العربیہ ڈا‌ٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں‌ نے بتایا کہ میں اپنی تصاویر کو پوری دنیا تک پھیلانا اور عالمی نمائشوں میں شامل کرنا چاہتا ہوں۔ میں دنیا کو یہ بتانا چاہتا ہوں کہ سعودی عرب قدرت کے حسین مقامات سے خالی نہیں بلکہ مملکت میں ایسے دلکش مقامات موجود ہیں جو سیاحوں‌ کی توجہ کا مرکز بن سکتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ میرا مقصد سعودی عرب کے حسین مقامات کو نیشنل جیوگرافک چینل پر متعارف کرانا ہے۔

یاد رہے کہ عسیر کے علاقے میں واقع 'بللسمر' کو بنی الاسمر یا بللسمر کے نام سے جانے جانے والے ایک قدیم عرب قبیلے کا مسکن بتایا جاتا ہے۔ یہ قبیلہ جبال السروات پہاڑی سلسلہ بالخصوص سراۃ الحجر، شعف بیحان چوٹی، شمال میں تنومہ، بنو شھر، جنوب میں بللسمر، مغرب میں الریش اور بارق جب کہ مشرق میں شھران کے علاقوں تک پھیلا ہوا ہے۔