.

’ای –سگریٹ‘ بھی صحت کے لئے مضر قرار دے دیا گیا: تحقیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سگریٹ نوشی کا صحت مند متبادل سمجھے جانے والے ’ای سگریٹ‘ کے انسانی صحت پر اثرات پر بحث تو جاری ہے مگر اب ایک تحقیق کے نتیجے میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ’ای سگریٹ‘ میں استعمال کئے جانے مختلف ’’ذائقے‘‘امراض قلب پیدا کرنے کا باعث بن رہے ہیں۔

روایتی سگریٹ نوشی سے ہونے والی بیماریوں، خصوصا سرطان، کے خوف سے نوجوانوں میں ای سگریٹ کے استعمال کا رحجان بڑھ رہا ہے۔ سگریٹ نوشی سے سرطان کے علاوہ دل کے امراض بھی ہو سکتے ہیں۔ تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ ای سگریٹ کے دھویں سے صحت سے متعلق پیچیدہ مسائل ہوسکتے ہیں۔

امریکا کی سٹین فورڈ یونیورسٹی کی ادارہ امراض قلب کے ڈائریکٹر جوزف وو کا کہنا ہے کہ ان کی ٹیم نے لیبارٹری کے ٹیسٹ کے دوران چھ مختلف ای سگریٹ فلیورز کو انسانی بلڈ سیلز کے ساتھ ملا کر ان کا نتیجہ ریکارڈ کیا ہے۔ریسرچ کے مطابق نکوٹین کی موجودگی کے بغیر بھی کئی فلیورنے خون کے خلیوں کو نقصان پہنچانا شروع کر دیا تھا۔ دارچینی اور پودینے کے فلیور نے خون کو سب سے زیادہ نقصان پہنچایا۔

یونیورسٹی آف میساچوسٹس کی ڈاکٹر جین فریڈ مین نے خبردار کیا کہ اس طرح کی محدود تحقیق سے ہم دل کی بیماریوں اور ای سگریٹ میں حتمی تعلق نہیں قرار دے سکتے ہیں۔امریکی محکمہ صحت کے حکام کو ملک میں نوجوان خصوصا کم عمر افراد میں ای سگریٹ کے بڑھتے ہوئے استعمال پر تشویش میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے ۔