.

ترکی میں بے روزگاروں کی تعداد قطر کی آبادی کا 3 گُنا ہے : ریپبلکن پیپلز پارٹی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی میں حزب اختلاف کی جماعت "ریپبلکن پیپلز پارٹی" کے نائب سربراہ ولی اغبابا کا کہنا ہے کہ ترکی میں بے روزگار افراد کی حقیقی تعداد 85 لاکھ تک پہنچ گئی ہے جو کہ دنیا کے 97 ملکوں کی آبادی سے زیادہ ہے ،،، اور ترکی کی محبوب ریاست قطر کی مجموعی آبادی کا 3 گُنا ہے۔

روسی خبر رساں ایجنسی "اسپٹنک" کے مطابق اغبابا نے کہا کہ بے روزگاری اور بدعنوانی کے علاوہ اگر کوئی معاملہ زیر بحث آنا چاہیے تو وہ ریٹائرڈ افراد کی پینشن ہے کیوں کہ یہ بہت سے گھروں کے لیے آمدنی کا واحد ذریعہ بن گیا ہے۔

اغبابا نے مزید کہا کہ "افسوس کے ساتھ ،،، ترکی کو اپنی تاریخ کا خطر ناک ترین بحران درپیش ہے۔ ملک میں بے روزگاروں کی تعداد 1994 اور 2001 کے اقتصادی بحرانوں کے مقابلے میں کہیں زیادہ خراب پوزیشن پر آ چکی ہے۔ اگر بحران کا سلسلہ جاری رہا تو یہ تعداد مزید کئی گنا ہو جائے گی۔ ترکی کی صورت حال انتہائی خراب ہے اور بے روزگاری کی شرح لیبیا اور مصر سے بھی تجاوز کر گئی ہے"۔

اپوزیشن جماعت کے نائب سربراہ کے مطابق اس اقتصادی بحران کی قیمت اس کے ذمے دار افراد نہیں بلکہ ملک کے مزدور چکا رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ گذشتہ 17 برس میں پیشہ وارانہ ذمے داریوں کی انجام دہی کے دوران حادثات کے نتیجے میں 22 ہزار سے زیادہ ملازمین اپنی جانیں گنوا چکے ہیں۔ اس حوالے سے پارلیمنٹ میں تجویز پیش کی گئی مگر حکومت نے اسے مسترد کر دیا۔