.

امریکا جانے سے پہلے سوچ لیں،پولیس ہراساں کرسکتی ہے،جرم ہو سکتا ہے:چین کا شہریوں کو انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چین نے امریکا جانے والے اپنے شہریوں کو منگل کے روز دو انتباہ جاری کیے ہیں اور انھیں خبردار کیا ہے کہ وہ امریکا کے سفر سے گریز کریں کیونکہ انھیں وہاں پولیس ہراساں کرسکتی ہے اور ان کے ساتھ کوئی جرم ہوسکتا ہے۔

چین نے یہ انتباہ ایسے وقت میں جاری کیا ہے جب اس کی امریکا کے ساتھ تجارتی جنگ جاری ہے اور دنیا کی ان دونوں بڑی معیشتوں کے درمیان کشیدگی اور لفظی جنگ عروج پر ہے اور دونوں ہی ایک دوسرے کو انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے طعنے دے رہے ہیں۔

چین کی وزارتِ ثقافت وسیاحت نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ حالیہ دنوں میں امریکا میں بندوق سے تشدد ،ڈکیتی اور چوری کے واقعات رونما ہوئے ہیں‘‘۔

بیان میں چینی سیاحوں کو باور کرایا گیا ہے کہ ’’ وہ امریکا جانے کے خطرات کا مکمل جائزہ لیں ، اپنی جائے منزل میں امن وامان کی صورت حال کو سمجھ لیں،قانون اور قواعد وضوابط کے بارے میں جان لیں اور اپنے تحفظ کے لیے پیشگی حفاظتی تدابیر سے کما حقہ آگاہی حاصل کر لیں‘‘۔

چین کی وزارت خارجہ نے الگ سے انتباہ جاری کیا ہے اور اس نے کہا ہے کہ ا مریکا کی قانون نافذ کرنے والی ایجنسیاں اپنے ملک میں چینی شہریوں کو ہراساں کرنے کے لیے امیگریشن اور موقع پر انٹرویو کے طریق کار کو بار بار استعمال کرتی ہیں۔

اس نے امریکا میں چینی شہریوں اور چین کے فنڈ سے چلنے والے اداروں پر زور دیا ہے کہ وہ محتاط رہیں، آگہی میں اضافہ کریں اور پیشگی حفاظتی اقدامات کو موثر بنائیں ۔

ان دونوں انتباہوں سے ایک روز قبل ہی چین کی وزارتِ تعلیم نے کہا تھا کہ طلبہ اور ماہرین تعلیم(اکیڈمکس) کو امریکی ویزے کے حصول میں مشکلات کا سامنا ہے۔وزارت نے ان پر زور دیا ہے کہ وہ امریکا کے سفر کے ’’ خطرات‘‘ کا جائزہ لے لیں۔