.

جرمن وزیر خارجہ کا ایران کے دورے سے قبل خلیج میں استحکام پر زور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جرمن وزیر خارجہ ہائیکو ماس نے امریکا اور اس کے اتحادیوں کی ایران سے کشیدگی کے تناظر میں خلیج عرب میں استحکام کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

وہ ابو ظبی میں اپنے اماراتی ہم منصب شیخ عبداللہ بن زاید آل نہیان کے ساتھ مشترکہ نیوز کانفرنس میں گفتگو کررہے تھے۔وہ ایران اور امریکا کے درمیان کشیدگی کے خاتمے کے لیے مشرقِ اوسط کے دورے پر ہیں۔ وہ اتوار کو اردن کے دارالحکومت عمان سےابو ظبی پہنچے تھے۔

اماراتی وزیر خارجہ شیخ عبداللہ بن زاید نے ان سے ملاقات میں کہا کہ فجیرہ میں چار بحری جہازوں کے خلاف تخریبی کارروائی دراصل متحدہ عرب امارات اور دوسرے ممالک پر حملہ تھا اور اس سے بحری جہازرانی بھی خطرے سے دوچار ہوگئی ہے۔

انھوں نے بتایا کہ یو اے ای ، سعودی عرب اور ناروے اپنے بحری جہازوں پر تخریبی حملے کی تحقیقات کررہے ہیں اور وہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو ان تحقیقات کے نتائج سے آگاہ کریں گے۔

شیخ عبداللہ نے بتایا کہ انھوں نے وزیرخارجہ ہائیکو ماس سے یو اے ای اور جرمنی کے درمیان دوطرفہ تزویراتی تعلقات کے بارے میں بھی تبادلہ خیال کیا ہے ۔اس کے علاوہ سوڈان ، یمن اور شام میں جاری بحرانوں سے متعلق امور پر بات چیت کی ہے۔

ہائیکو ماس کا کہنا تھا کہ وہ ایرانیوں کو اس بات سے آگاہ کریں گے کہ یورپی یونین ان کے ملک کے میزائل پروگرام کو مسترد کرتی ہے۔

جرمنی کے ایک سفارتی ذریعے کے مطابق وزیر خارجہ ہائیکو ماس سوموار کو ایرانی صدر حسن روحانی سے تہران میں ملاقات کریں گے۔اسی ہفتے جاپانی وزیراعظم شینزو ایبے بھی ایران کا دورہ کرنے والے ہیں۔وہ بھی ایران اور امریکا کے درمیان جاری کشیدگی کے خاتمے کے لیے ایرانی قیادت سے بات چیت کریں گے۔