.

روس نے اوپیک معاہدے میں توسیع کے لیے کوئی اقدام نہیں‌ کیا: خالد الفالح

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے توانائی اور پٹرولیم کےوزیر خالد الفالح نے کہا ہے کہ روس کی طرف سے تیل کی پیداوار بڑھانے کے حوالے سے 'اوپیک' کے رکن ممالک میں طے پائے معاہدے میں توسیع کے لیے کوئی قدم نہیں اٹھایا ہے۔ اوپیک کے تمام رکن ممالک نے رواں سال کےاختتام تک تیل کی پیدوارا بڑھانے کےلیے ایک سمجھوتہ کیا تھا تاہم اس میں مزید توسیع کے لیے کوئی اقدام نہیں‌ کیا گیا۔

اپنے دورہ روس کےدوران ماسکو میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں سعودی وزیر نے کہا کہ وہ تیل کی پیدواوار بڑھانے کے حوالے سے اوپیک کے رکن ممالک میں طے پائے سمجھوتے میں توسیع کے لیے اپنے روسی ہم منصب الیکذنڈر نوفاک سے بات کریں گے۔ شاید رواں ماہ جاپان میں 'جی 20' اجلاس میں اس موضوع پر بات چیت کا آخری موقع ہوگا۔ اس سے قبل ویانا میں 'اوپیک' کے رکن ممالک کا خصوصی اجلاس ہوگا۔

خالد الفالح کا کہنا تھا کہ سعودی عرب کی آئل کمپنی 'ارامکو' نوفاک کے ساتھ قدرتی گیس کے قطب شمالی میں پروجیکٹ کے حوالے سے ایک معاہدہ کرنا چاہتی ہے۔ توقع ہے کہ روس 'ارامکو' کی تجاویزقبول کرے گا۔