.

لیبیا کی قومی فوج کا طرابلس میں 3 عسکری ٹھکانوں پر کنٹرول

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی قومی فوج کے ایک ذریعے نے تصدیق کی ہے کہ ان کی فورسز نے دارالحکومت طرابلس میں تین عسکری ٹھکانوں پر کنٹرول حاصل کر لیا ہے جن میں وفاق کی حکومت کی فورسز کی دو رصد گاہیں شامل ہیں۔ ذریعے کے مطابق الرملہ کے علاقے میں لیبیا کی فوج نے پیش قدمی کی ہے۔ اس دوران وفاق کی فورسز کی متعدد عسکری گاڑیاں تباہ کر دی گئیں۔

لیبیا کی قومی فوج کے لڑاکا طیاروں نے ہفتے کی دوپہر طرابلس کے جنوب میں صلاح الدین کے علاقے میں مسلح ملیشیاؤں کے گولہ بارود کے گوداموں کو فضائی حملوں کا نشانہ بنایا۔

دوسری جانب لیبیا کی قومی وفاق کی حکومت کی فورسز کے ذرائع نے بتایا ہے کہ اتوار کے روز طرابلس کے ہوائی اڈے کے راستے پر بھاری ہتھیاروں کے ساتھ ایک بار پھر جھڑپیں شروع ہو گئیں۔

وفاق کی حکومت کے زیر انتظام فوج کے چیف آف اسٹاف کا کہنا ہے کہ ان کی فورسز منصوبے کے مطابق لڑائی میں مصروف ہے اور مختلف محوروں پر پیش قدمی کو یقینی بنا رہی ہے۔

اس سے چند گھنٹے پہلے لیبیا کے لیے اقوام متحدہ کے مشن کے سربراہ غسان سلامہ نے طرابلس میں تمام متحارب فریقوں پر زور دیا تھا کہ وہ انسانی بنیادوں پر فوری جنگ بندی عمل میں لائیں۔

اپریل میں لڑائی کے آغاز کے بعد یہ تیسرا موقع ہے جب اقوام متحدہ نے تنازع کے دونوں فریقوں سے انسانی بنیادوں پر جنگ بندی کا مطالبہ کیا ہے۔ اس کا مقصد جھڑپوں کے مقامات میں پھنسے شہریوں اور زخمیوں کو منتقل کرنا ہے۔ تاہم ابھی تک ان مطالبات پر عمل درامد نہیں ہوا۔