.

ایران کے ساتھ بحران ہمارے کنٹرول میں ہے : ٹرمپ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے باور کرایا ہے کہ ایران کے ساتھ بحران کنٹرول میں ہے۔

بدھ کے روز آئیوا میں اپنے حامیوں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے ایران کے حوالے سے سابق انتظامیہ کی پالیسی کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ ٹرمپ نے کہا کہ "سابق انتظامیہ نے ایران کو 150 ارب ڈالر تھما دیے۔ اسی طرح طیاروں کے ذریعے کروڑوں ڈالر نقدی کی صورت میں اسے پہنچائے گئے۔ اس سب کے مقابل ہمیں کیا حاصل ہوا ،،، ایک برا معاہدہ"۔ امریکی صدر کا اشارہ 2015 میں ایران اور چھ عالمی طاقتوں کے بیچ طے پانے والے جوہری معاہدے کی جانب تھا۔

ٹرمپ نے کہا کہ معاہدے پر دستخط کے بعد ایرانیوں نے امریکا مردہ باد کے نعرے لگائے۔ ٹرمپ نے استفسار کیا کہ "امریکی عہدے دار نے ایسے لوگوں کے ساتھ معاہدے پر دستخط کیسے کر دیے جو امریکا مردہ باد کے نعرے لگا رہے ہوں؟!".

امریکی صدر نے مزید کہا کہ اس وقت یہ نعرہ سننے مین نہیں آ رہا ہے۔ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ "بہتر ہے کہ میں یہ نہ سنوں"۔

یاد رہے کہ ٹرمپ نے پانچ جون کو ایک سوال کے جواب کہا تھا کہ ایران کے ساتھ جنگ کا امکان ہمیشہ رہتا ہے تاہم ساتھ ہی امریکی صدر کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ بات چیت کو ترجیح دیتے ہیں۔

گذشتہ ہفتے برطانیہ کے دورے میں ٹرمپ نے اعلان کیا تھا کہ ان کا ملک ایران کی دہشت گرد کارروائیوں پر روک لگانے کے لیے پر عزم ہے۔