.

ایران کا سی آئی اے کے سراغرسانی نیٹ ورک کو توڑنے اور متعدد جاسوسوں کی گرفتاری کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران نے امریکا کی سنٹرل انٹیلی جنس ایجنسی ( سی آئی اے) سے وابستہ جاسوسی کے ایک نئے نیٹ ورک کو توڑنے اور متعدد جاسوسوں کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

ایران کی سرکاری خبررساں ایجنسی ایرنا نے وزارت ِ سراغرسانی کے ایک عہدہ دار کے حوالے سے منگل کے روز بتایا ہے کہ ’’ ہم نے حال ہی میں امریکی انٹیلی جنس سروسز سے اشارے ملنے کے بعد امریکیوں کے نئے بھرتی کنندگان کا پتا چلا یا ہے اور ایک نئے نیٹ ورک کو توڑا ہے‘‘۔

اس نے مزید کہا ہے کہ سی آئی اے کے نیٹ ورک کے بعض ارکان کو گرفتاری کے بعد عدلیہ کے حوالے کردیا گیا ہے جبکہ بعض سے ابھی مزید تحقیقات جاری ہے۔

ایرنانے اس کو امریکا کی انٹیلی جنس سروسز کے لیے ایک بڑا دھچکا قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ ایران نے جاسوسی کے اس نیٹ ورک کو پکڑنے اور توڑنے کے لیے ’’ غیر ملکی اتحادیوں ‘‘ کے تعاون سے کارروائی کی تھی لیکن اس نے کسی ریاست کا نام نہیں بتایا ہے ۔

خبررساں ایجنسی کے ذرائع نے یہ نہیں بتایا ہے کہ ایرانی حکام نے کل کتنے غیر ملکی ایجنٹوں کو گرفتار کیا ہے اور آیا وہ صرف ایران میں کام کررہے تھے یا اس سے باہر بھی ایران کے خلاف بروئے کار تھے۔

ایران کے سرکاری ٹیلی ویژن نے منگل کو نشر کیے گئے ایک پروگرام میں 2013ء میں سی آئی اے کے ایک نیٹ ورک کو توڑنے کے لیے کارروائی کی تفصیل بیان کی ہے۔

گذشتہ جمعرات کو خلیج عُمان میں آبنائے ہُرمز کے نزدیک دو تیل بردا بحری ر جہازوں پر حملوں کے بعد سے امریکا اور ایران کے درمیان کشیدگی میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔امریکا نے ایران پر ان دونوں حملوں کا الزام عاید کیا ہے جبکہ ایران نے اس الزام کو مسترد کردیا ہے۔