.

سعودی عرب کی خصوصی فورسز کی کارروائی ، یمن میں داعش کا امیر ساتھیوں سمیت گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد نے منگل کے روز ایک بیان میں اطلاع دی ہے کہ سعودی خصوصی فورسز نے یمن میں سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے امیر ابو اسامہ المہاجر کو گرفتار کر لیا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق ابو اسامہ المہاجر اور اس انتہا پسند گروپ کے دوسرے ارکان کو 3 جون کو ایک مشترکہ کارروائی کے دوران میں گرفتار کیا گیا تھا۔ان کے قبضے سے ہتھیار ،گولہ بارود اور ٹیلی مواصلات کے آلات بھی برآمد ہوئے تھے۔

عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے کہا ہے کہ سعودی فورسز نے یمنی فورسز کے ساتھ مل کر ایک مکان میں یہ چھاپا مار کارروائی کی تھی۔ البتہ انھوں نے اس مکان کے محل وقوع کے بارے میں کچھ نہیں بتایا۔

انھوں نے بتایا کہ اس مکان کی کئی روز تک قریب سے نگرانی کی جاتی رہی تھی جس سے اس میں دہشت گرد گروپ داعش کے لیڈر کی دوسرے عناصر کے ساتھ موجودگی کا پتا چلا تھا ۔ان کے ساتھ تین عورتیں اور تین بچے بھی رہ رہے تھے۔

انھوں نے کہا کہ ’’ نگرانی اور مسلسل مانیٹرنگ کے ذریعے ان کے روزمرہ کے معمولات ، نقل وحرکت کی تفہیم ور ان کی مکمل طور پر شناخت کے بعد فورسز نے کامیاب کارروائی کی تھی ۔انھوں نے ان دہشت گردوں کو مختصر دورانیے میں گرفتار کر لیا تھا اور اس کارروائی کے دوران میں اس امر کو بھی یقینی بنایا تھا کہ مکان میں موجود بچوں اور عورتوں کو کوئی نقصان نہ پہنچے۔

بیان کے مطابق ان دہشت گردوں کی گرفتاری ، ان کے مکان میں موجود اسلحہ اور دیگر آلات کو پکڑنے کے لیے یہ تمام چھاپا مار کارروائی صرف دس منٹ میں مکمل ہوگئی تھی۔سعودی فورسز نے تب یمن کے مقامی وقت کے مطابق صبح 9 بج کر 20 منٹ پر یہ کارروائی شروع کی تھی اور اس کو ساڑھے 9 بجے مکمل بھی کر لیا تھا۔