.

سعودی ارامکو اور جنوبی کوریا کی کمپنیوں کے درمیان 9 ارب ڈالر کے 12 سمجھوتوں پر دستخط

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سیول میں العربیہ کے نمائندے نے تصدیق کی ہے کہ جنوبی کوریا کے صدر اور سعودی ولی عہد کی موجودگی میں دونوں ملکوں کے بیچ متعدد سمجھوتوں پر دستخط کیے جا رہے ہیں۔

دنیا میں تیل پیدا کرنے والی سب سے بڑی کمپنی سعودی ارامکو کا کہنا ہے کہ اس نے جنوبی کوریائی شراکت داروں کے ساتھ 9 ارب ڈالر مالیت کے 12 سمجھوتوں پر دستخط کیے ہیں۔

ارامکو کمپنی کی جانب سے دستخط کیے جانے والے سمجھوتوں کا تعلق بحری جہازوں اور انجنوں کی تیاری، ریفائنریز، پیٹروکیمیکلز، خام تیل کی رسد اور فروخت اور تیل کی ذخیرہ اندوزی سے ہے۔

ارامکو کمپنی کے چیف ایگزیکٹو امین الناصر کا کہنا ہے کہ سعودی ارامکو کی سرگرمیوں کی کامیابی کے لیے جنوبی کوریا ایک اہم اقتصادی اور تزویراتی شراکت دار ہے۔ اسی طرح جنوبی کوریا کے لیے سعودی تیل اور گیس کی برآمدات اقتصادی ترقی میں اپنا کردار ادا کر رہی ہیں۔

الناصر کے مطابق حالیہ سمجھوتوں کا منفرد پہلو یہ ہے کہ ان میں دونوں ملکوں میں مشترکہ سرمایہ کاری شامل ہے۔

کچھ عرصہ قبل سعودی ارامکو نے جنوبی کوریا کی معروف کمپنی ہنڈائی (بحری جہاز بنانے والی دنیا کی تیسری بڑی کمپنی) کے ساتھ ایک مشترکہ منصوبے کی بنیاد رکھی۔ اس کے تحت سعودی عرب میں راس الخیر کے صںعتی شہر میں خلیج کا سب سے بڑا شپ یارڈ تعمیر کیا جائے گا۔ ہنڈائی کمپنی اس شپ یارڈ کی ڈیزائننگ اور انجینئرنگ کے کام کی ذمے دار ہو گی۔

اس سے قبل سعودی ارامکو تقریبا 1.25 ارب امریکی ڈالر میں جنوبی کوریا کی کمپنی "ہنڈائی آئل بینک" کے 17% حصص خرید چکی ہے۔ مذکورہ آئل ریفائننگ کمپنی 1964 میں قائم کی گئی تھی۔ اس کی مرکزی ریفائنری میں پیداوار کی یومیہ صلاحیت 6.5 لاکھ بیرل ہے۔

سعودی عرب میں جنوبی کوریا کے سفیر کے مطابق "کوریا - سعودی ویژن 2030 کمیٹی" دونوں ملکوں کے بیچ شراکت داری کے مواقع تلاش کرنے کے سلسلے میں بنیادی پلیٹ فارم ہو گا۔ اس کمیٹی نے اکتوبر 2017 میں کام شروع کیا تھا۔

سفیر کا کہنا ہے کہ مذکورہ کمیٹی نے تمام حالیہ منصوبوں کا جائزہ لیا ہے۔ اس سلسلے میں 3 اپریل 2019 کو سیول میں منعقد ہونے والے کمیٹی کے دوسرے اجلاس کے دوران ویژن 2030 کے ضمن میں شراکت داری کے مواقع تلاش کیے گئے۔ اس دوران دونوں ممالک 5 مرکزی سیکٹروں میں 43 منصوبوں پر متفق ہو گئے۔ ان میں تونائی اور صنعت، اسمارٹ اور ڈیجیٹل انفرا اسٹرکچر، صحت اور طبی دیکھ بھال، صلاحیتوں کی تعمیر اور چھوٹی اور درمیانی کمپنیاں اور سرمایہ کاری شامل ہے۔

کوریائی سفیر نے مزید کہا کہ ویژن 2030 پروگرام کے میدان میں تعاون سعودی عرب اور جنوبی کوریا کے درمیان مضبوط دوستی کو مزید مستحکم کرے گا اور یہ سلسلہ مستقبل میں جاری رہے گا۔

سفیر کے مطابق 2018 میں جنوبی کوریا اور سعودی عرب کے درمیان تجارتی تبادلے کا حجم 30.2 ارب ڈالر رہا۔ یہ 2017 کے مقابلے میں 22.4 فی صد زیادہ ہے۔ سال 2015 کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ تجارتی تبادلے کا حجم 30 ارب ڈالر سے تجاوز کر گیا۔