.

بین المذاہب مکالمے میں سعودی عرب کاقائدانہ کردار ، اقوام متحدہ کے ایلچی کا اعتراف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے اتحاد برائے تہذیب کے اعلیٰ نمایندہ میجوئیل اینجل موراٹینوس نے کہا ہے کہ سعودی عرب ہمیشہ سے مختلف مذاہب اور عقیدوں کے درمیان مکالمے کے فروغ میں قائدانہ کردار ادا کررہا ہے۔ انھوں نے یہ بات سعودی شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے ملاقات میں کہی ہے۔

انھوں نے بعد میں العربیہ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’’اقوام متحدہ اور اتحاد برائے تہذیب کا بڑا مقصد بھی یہی ہے۔اس مقصد کے حصول اور اقوام متحدہ میں میرے مینڈیٹ کے تحت عرب دنیا ، اسلامی برادری اور عالمی برادری میں سعودی عرب ایک اہم ملک ہے جس کے ساتھ مل کر کام کیا جاسکتا ہے‘‘۔

انھوں نے شاہ سلمان سے ملاقات میں سعودی عرب اور دنیا کی مختلف ثقافتوں کے درمیان ثقافتی اور تہذیبی پلوں کی تعمیر کے لیے شراکت داری کے مواقع کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ہے۔

انھوں نے سعودی عرب میں قیام کے دوران میں وزیر خارجہ ڈاکٹر ابراہیم بن عبدالعزیز العساف اور ویانا میں قائم شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز مرکز برائے بین المذاہب اور بین الثقافت مکالمہ کے سیریٹری جنرل فیصل بن عبدالرحمان بن معمر سے بھی ملاقات کی ہے اور ان سے سعودی عرب اور اقوام متحدہ کے درمیان بین المذاہب مکالمے کے فورم کے تحت تعاون پر تبادلہ خیال کیا ہے۔