.

ایران نے خلیج میں برطانوی آئیل ٹینکر کو پکڑنے سے متعلق رپورٹس کی تردید کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران نے خلیج میں برطانیہ کے ایک تیل بردار جہاز کو پکڑنے سے متعلق رپورٹس کو من گھڑت قرار دے کر مسترد کردیا ہے۔

ٹویٹر پر بعض رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ برطانیہ کے پرچم بردار سپر ٹینکر کوخلیج میں روک لیا گیا ہے ۔اس کا نام ’ پیسفک وائےایجر‘ بتایا گیا ہے مگر ایران کے ایک عہدہ دار نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر اس اطلاع کی تردید کی ہے۔

برطانیہ کی تجارتی جہاز رانی کے سرگرمیوں کے ذمے دار ایک افسر نے کہا کہ اس سپر ٹینکر کو بندرگاہ میں اس کو آمد کے تخمینی وقت ( ای ٹی اے) کے تعیّن کے لیے روکا گیا تھا۔یہ ایک معمول کا طریق کار ہے ۔ان کے بہ قول جہاز بالکل ’محفوظ اور ٹھیک‘ ہے۔

واضح رہے کہ برطانیہ کی شاہی میرینز نے جبل الطارق ( جبرالٹر) میں ایران کے ایک سُپر ٹینکر کو پکڑ لیا تھا ۔یہ جہاز یورپی یونین کی پابندیوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے شام کے لیے تیل لے کر جارہا تھا۔اس کے ردعمل میں سپاہِ پاسداران انقلاب ایران کے ایک کمانڈر نے جمعہ کو ایک بیان میں برطانیہ کے ایک بحری جہاز کو ضبط کرنے کی دھمکی دی تھی۔