.

لیبیا: جنرل حفتر کی زیر کمان فوج نے تازہ دم کُمک طرابلس بھیج دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

جنرل خلیفہ حفتر کی زیر کمان لیبی فوج کے تازہ دم نئے فوجی دیتے طرابلس بھجوا دیے ہیں۔ یہ بریگیڈز دارالحکومت کو آزاد کرانے کے لیے جاری آپریشن کے دوسرے مرحلے میں شرکت کریں گے۔

لیبیا کی فوج کے ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ مذکورہ فورسز کی نقل وحرکت جنرل خلیفہ حفتر کی ہدایات پر عمل میں آئی ہے۔ یہ لڑائی میں شرکت کی غرض سے بھجوائی جانے والی دوسری عسکری کمک ہے۔ اس مرحلے کی قیادت بن غازی اور درنہ کو آزاد کرانے کے معرکوں میں شریک بریگیڈز کریں گے جو دہشت گرد جماعتوں سے نمٹنے کے حوالے سے لڑائی کا بڑا تجربہ رکھتے ہیں۔

فوج کی کمان کے میڈیا بیورو نے ایک وڈیو جاری کی ہے جس میں ان عسکری بریگیڈز کی اپنے تمام تر ساز وسامان، افراد اور گاڑیوں کے ساتھ مغربی ریجن کی جانب حرکت کرتے دیکھا گیا ہے۔

اس سے قبل یو این سلامتی کونسل نے ایک بیان میں لیبیا میں فوری فائر بندی کا مطالبہ کیا تھا۔ امریکی حمایت کے ساتھ جاری ہونے والے بیان میں لیبیائی فریقوں پر زور دیا گیا ہے کہ وہ جلد سیاسی بات چیت کی طرف لوٹیں۔ یہ بات چیت اقوام متحدہ کی وساطت سے انجام پا رہی ہے۔