.

سوڈان کی عبوری کونسل نئے دستور کی منظوری دینے جا رہی ہے: لبات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوڈان کے لئے افریقی اتحاد کے خصوصی ایلچی محمد الحسن لبات نے ایک اعلان میں بتایا ہے کہ ’’سوڈان کی سویلین اور فوج پر مشتمل عبوریحکمران کونسل نے مذاکرات کے بعد ایک دستور کا مسودہ تشکیل دیا ہے۔‘‘الحسن لبات کا کہنا تھا کہ’’ متعلقہ فریق دوسرے معاہدے، بشمول نئے دستور، کی منظور ی دیں گے ۔ ‘‘

’’العربیہ‘‘ کو اپنے ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ سوڈان کی حکمران فوجی کونسل اور اپوزیشن رہنما ایک معاہدے پر متفق ہو گئے ہیں، تاہم افریقی اتحاد کے خصوصی ایلچی نے بتایا کہ مسودہ تیار کرنے والی قانونی کمیٹی نے فنی وجوہات کی بنا پر اسے ابھی مشتہر نہیں کیا۔

اخباری ذرائع کے مطابق ڈرافٹنگ کمیٹی نے معاہدے کے اعلان میں تاخیر اس لئے کی ہے کہ انگریزی سے عربی میں دستور کے ترجمہ کے وقت بعض الفاظ پر اختلاف سامنے آیا ہے۔

افریقی اتحاد اور ایتھوپیائی نمائندوں کی مصالحتی کوششوں کے نتیجے میں مذکورہ شہرہ آفاق معاہدہ طے پایا۔ اس معاہدے کے بموجب سوڈان کی عبوری سول اور فوجی حکمران کونسل تشکیل پائی ہے۔

نئی حکمران کونسل مظاہرین کے مطالبات کی روشنی میں ملک میں مکمل سول انتظامیہ کی تشکیل کی جانب پہلا قدم ہے۔