.

گوٹیرس کی جانب سے شام میں ہسپتالوں پر بم باری کی شدید مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیرس نے شام کے شمال مغرب میں شہریوں کو نشانہ بنانے والے فضائی حملوں کی "شدید" مذمت کی ہے۔ ان یلغاروں نے خاص طور پر طبّی مراکز اور طبی عملے" کو بھی لپیٹ میں لے لیا ہے۔

جمعرات کے روز جاری ایک بیان میں گوتیریس نے کہا کہ ان کئی (طبّی) تنصیبات کو بدھ کے روز بم باری کا نشانہ بنایا گیا۔ ان میں معرّہ النعمان میں واقع ایک ہسپتال بھی شامل ہے۔ یہ علاقے کے سب سے بڑے طبّی اداروں میں سے ایک ہے"۔

گذشتہ چند ماہ کے دوران سلامتی کونسل کے کئی اجلاسوں میں ان فضائی حملوں کو زیر بحث لایا جاتا رہا ہے۔ ان حملوں کا الزام بشار حکومت اور اس کے حلیف روس پر عائد کیا جاتا ہے۔

گوٹیرس نے یاد دہانی کراتے ہوئے کہا کہ شہریوں اور شہری انفرا اسٹرکچر جس میں طبّی تنصیبات شامل ہیں ،، ان کا تحفظ لازم ہے۔ انہوں نے باور کرایا کہ جو کوئی بھی بین الاقوامی انسانی قانون کی خلاف ورزی کا ارتکاب کرے ، اُس کا احتساب ہونا چاہیے۔

شمال مغربی شام میں بشار حکومت کی فورسز اور جنگجو گروپوں (جن میں ہيئۃ تحرير الشام سرفہرست ہے) کے درمیان بدھ کی شام سے جاری شدید جھڑپوں میں فریقین کے 100 سے زیادہ ارکان مارے جا چکے ہیں۔ ان کے علاوہ جمعرات کے روز بم باری کے نتیجے میں کم از کم آٹھ شہری جاں بحق ہو گئے۔