.

آبنائے ہرمز میں امریکا نے ایران کا ڈرون مار گرایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ امریکی بحریہ نے آبنائے ہرمز میں ایک ایرانی ڈرون کو مار گرایا ہے۔

ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس کی ایک تقریب کے دوران اخباری نمائندوں کو بتایا کہ یو ایس ایس باکسر نامی امریکی جنگی بحری جہاز نے جمعرات کو اس وقت ’دفاعی کارروائی‘ کی جب یہ ڈرون بحری جہاز کے 1000 گز تک قریب آ کر جہاز اور اس کے عملے پر دھونس جما رہا تھا۔

صدر نے بتایا کہ ’’بین الاقوامی پانیوں سے گزرنے والے جہازوں کے خلاف یہ ایران کی جانب سے کئی اشتعال انگیزیوں میں سے تازہ ترین مخاصمانہ اقدام تھا‘‘۔ انھوں نے کہا کہ ’’امریکہ اپنے اہلکاروں، اپنی تنصیبات اور مفادات کے دفاع کا حق محفوظ رکھتا ہے‘‘۔

تاہم، ٹرمپ نے تمام ملکوں پر زور دیا ہے کہ وہ ایران کی مذمت کریں۔ ان کے بقول، ’’یہ ایران کی جانب سے جہاز رانی اور عالمی کاروبار کی آزادی میں خلل ڈالنے کی ایک کوشش تھی‘‘۔

ایک بیان میں پینٹاگان نے کہا ہے کہ یہ واقعہ مقامی وقت کے مطابق، تقریباً دن کے 10 بجے ہوا۔

ادھر ایران نے کہا ہے کہ اس کے پاس اپنے ڈرون کے تباہ ہونے کے حوالے سے کسی قسم کی معلومات نہیں ہیں۔

ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے نیو یارک میں کہا ہے کہ ’’مجھے ڈرون کے نقصان سے متعلق آج کوئی اطلاع موصول نہیں ہوئی ‘‘۔

ادھر تہران نے جمعرات کو یہ بھی کہا کہ اس نے ایک ’غیر ملکی ٹینکر‘ کو 12 افراد کے عملے سمیت پکڑا ہے جو خلیج میں ایندھن سمگل کر رہا تھا۔

خیال رہے کہ ایران نے کچھ روز قبل فضائی حدود کی حلاف ورزی پر امریکا کا بغیر پائلٹ کے ایک ڈرون بھی مار گرایا تھا جس پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹویٹ کی تھی کہ 'ایران نے بہت بڑی غلطی کی ہے۔'