.

امریکا : کم عمر بچوں نے ایک شخص کو مار مار کر ادھ مُوا کر ڈالا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا میں دو روز قبل پولیس نے ایک انوکھی وڈیو جاری کی ہے۔ چودہ جولائی کو سیکورٹی کیمرے کی آنکھ میں محفوظ ہونے والی وڈیو میں 13 سے 14 برس کے چودہ بچے بچیاں دارالحکومت واشنگٹن میں Washington Hilton Hotel نامی فائیو اسٹار ہوٹل کے باہر ایک شخص پر حملہ کرتے ہوئے دکھائی دے رہے ہیں۔ یہ شخص ہوٹل کے باہر اپنے ایک دوست کے ساتھ کھڑا تھا۔

ان میں دس بچوں نے مذکورہ شخص کی مکوں اور لاتوں سے پٹائی کی اور بھرپور گالیوں سے نواز کر اس شخص کی طبیعت صاف کر دی۔ پولیس نے نشانہ بننے والے شخص کا نام اور قومیت کا انکشاف نہیں کیا۔ اس اندھادھند پٹائی کے نتیجے میں یہ شخص بے ہوش ہو گیا۔

امریکی چینل فوکس نیوز کے مطابق پٹائی کا نشانہ بننے والا شخص اپنے دوست کے ہمراہ رات کے ایک بجے مذکورہ ہوٹل کے نزدیک پیدل گزر رہا تھا کہ اچانک بچوں کا ایک گروپ ان کے پاس پہنچا۔ بچوں میں سے ایک نے چِلّا کر کہا کہ "یہ ہے وہ" ... اس کے بعد بچوں کی اس شخص کے ساتھ تلخ کلامی ہوئی اور پھر بچوں نے مل کر اسے پیٹنا شروع کر دیا۔

سڑک پر گزرتے بعض راہ گیروں نے بچوں کو منتشر کر کے اس شخص کو زخمی حالت میں ہسپتال پہنچایا۔ معائنے کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ حملے اور مار پیٹ کے سبب اس کے سر میں شدید چوٹیں آئیں۔ اس کا چہرہ اور بائیں آنکھ بھی سُوج گئی تھی۔ نشانہ بننے والے شخص کے دوست کی بائیں آنکھ بھی سوجی نظر آئی کیوں کہ اس نے اپنے دوست کو بچوں کے حملے سے بچانے کی کوشش کی تھی۔ پولیس نے اس حرکت کا ارتکاب کرنے والے بچوں کی تلاش شروع کر دی ہے۔

یہ واقعہ کم عمر بچوں کی جانب سے بالغ افراد پر حملے کا پہلا واقعہ نہیں ہے۔ اس سے پہلے بھی اسی نوعیت کے مختلف واقعات سامنے آ چکے ہیں جن میں مختلف عمر کے بچوں نے اپنے سے بڑے بچوں یا افراد کو وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا۔